ماحولیاتی آلودگی کی وجہ سے اوسط عمر میں 2 سے 5 برس تک کمی آسکتی ہے

ماحولیاتی آلودگی کی وجہ سے اوسط عمر میں 2 سے 5 برس تک کمی آسکتی ہے

اسلام آباد: سینیٹرز کو آگاہ کیا گیا کہ ملک میں 43 فیصد آلودگی کم معیاری تیل کی درآمد اور ٹرانسپورٹ اور پاور سیکٹر کی جانب سے استعمال ہےیہ بھی بتایا گیا کہ پاکستان 2021 تک ماحول دوست ایندھن کا استعمال نہیں کرسکتا

سینیٹرز یہ جان کر پریشان ہوئے کہ آئل سیکٹر میں پاکستان کی آخری پالیسی 1997 میں بنائی گئی تھی اور اس کے بعد سے کسی نے ایسی پالیسی نہیں بنائی جو ٹیکنالوجی، ترقی اور دیگر ضروریات کے مطابق ہو۔
پاکستان پیپلزپارٹی کے سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکر کی سربراہی میں انسانی حقوق کی کمیٹی نے لاہور میں اسموگ کے بعد موسمیاتی تبدیلی کا معاملہ اٹھایا تھا۔
قائمہ کمیٹی نے گزشتہ روز ہونے والے اجلاس میں وزیر موسمیاتی تبدیلی، حکومت پنجاب کے نمائندوں، وزارت پیٹرولیم، آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) اور آئل ریفائنریز کے نمائندوں کو شرکت کی دعوت دی تھی۔
اجلاس میں ایڈیشنل سیکریٹری موسمیاتی تبدیلی نے کمیٹی کو بتایا کہ موسمیاتی تبدیلی کہ وجہ سے براہ راست یا بالواسطہ سالانہ ایک لاکھ 28 ہزار اموات ہوتی ہیں۔
ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ بچے اعضا کی بیماریوں سے لڑنے میں کمزور ہورہے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان میں 43 فیصد آلودگی درآمد کیے گئے غیرمعیاری تیل کی وجہ سے جو ٹرانسپورٹ انڈسٹری اور انرجی سیکٹر کی جانب سے استعمال کیا جاتا ہے۔
ایڈیشنل سیکریٹری نے مزید کہا کہ ’ پاکستان میں یورو-2 معیار لاگو ہوتا ہے جبکہ دنیا یورو-6 ٹیکنالوجی پر پہنچ چکی ہے‘۔
سینیٹرز کو بتایا گیا کہ کم پیداوار اور صحت کے اخراجات سے موسمیاتی تبدیلی کی وجہ سے 9 فیصد شرح نمو متاثر ہوتی ہے۔
انہوں نے کہا کہ وفاق اور صوبوں کے درمیان مضبوط تعاون کی ضرورت ہے اور ملک بھر میں معیار یکساں ہونے چاہیئیں۔
ملک کی 5 آئل ریفائنریز تاحال قدیم ہیں اور ہمارے تیل میں میگینیشیم اور سلفر کے اجزا شامل ہیں جو صحت کے لیے نقصان دہ ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

نیب نے جعلی بینک اکاؤنٹس اسکینڈل میں 22 کروڑ 40 لاکھ روپے برآمد کرکے حکومت سندھ کے حوالے

نیب نے جعلی بینک اکاؤنٹس اسکینڈل میں 22 کروڑ 40 لاکھ روپے برآمد کرکے حکومت سندھ کے حوالے

اسلام آباد: جاوید اقبال نے سندھ کے چیف سکریٹری ممتاز علی شاہ کو 22 کروڑ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے