روزانہ کی بنیاد پر یہ ٹنوں کی تعداد میں معدنی ذخائردیگر شہروں میں منتقل

روزانہ کی بنیاد پر یہ ٹنوں کی تعداد میں معدنی ذخائردیگر شہروں میں منتقل

ٹھٹھہ: سرکاری اور غیر سرکاری ذرائع نے ان علاقوں کے حالیہ دورے کے بعد ڈان کو بتایا کہ روزانہ کی بنیاد پر یہ ٹنوں کی تعداد میں معدنی ذخائر کو کراچی، حیدرآباد اور دیگر شہروں میں منتقل کیا جارہا ہے

معمول کے مطابق ان علاقوں سے سنہری سنگ مرمر، چونا کا پتھر، خام لوہا، ریتی بجری اور دیگر معدنیات سے بھرے 30 سے 40 ٹرک منتقل کیے جارہے ہیں۔
حیرانی کی بات یہ ہے کہ متعلقہ محکموں کے کسی بھی عہدیدار نے ان چیزوں کے لیے کھدائی اور نقل و حمل کی غیرقانونی سرگرمیوں پر نظر نہیں رکھی، ساتھ ہی یہ خدشہ ظاہر کیا گیا کہ بغیراجازت کے ہونے والے اس کام میں ان لوگوں نے تاجروں اور ٹرک ڈرائیورز کے ساتھ ہاتھ ملایا ہوا ہے۔
نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ ‘دن میں کسی بھی وقت شیخ اسمٰعیل، لاکھو پیر، ڈاڈوری، جھیرک، چھلیا اور اونگر جیسے بہت سے دیہات کے قریب بھاری مشینری موجود ہوتی ہے’۔
اس حوالے سے کمال شورو، ممتاز جاکھرو، پیر انور شاہ، ابراہیم جاکھرو، اللہ جوریو برفت، سارنگ چانڈیو اور ستار بہرانی گاؤں کے رہائشیوں کا کہنا تھا کہ بھاری مشینری اور دھماکوں کی آوازوں سے گاؤں کا پُرامن ماحول متاثر ہورہا ہے اور یہاں رہنے والوں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔
شکایت کی کہ معدنیات نکالنے کے عمل سے علاقہ دھول زدہ ہورہا ہے۔
ساتھ ہی کچھ مکینوں کا یہ بھی کہنا تھا کہ دھماکوں سے ان کے مکانات کی دیواروں میں دراڑیں بھی پڑ گئی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

سینئر سرکاری عہدیداروں نے 1976 کے ڈرگ ایکٹ کی خلاف ورزی

سینئر سرکاری عہدیداروں نے 1976 کے ڈرگ ایکٹ کی خلاف ورزی

کراچی: سینئر عہدیداروں نے عام لوگوں کو فائدہ پہنچانے کے لیے ڈریپ کے کام کو …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے