امریکی حکومت بل پیش کرنے والے بھارتی وزیرداخلہ امیت شاہ پرپابندی لگائے

امریکی حکومت بل پیش کرنے والے بھارتی وزیرداخلہ امیت شاہ پرپابندی لگائے

واشنگٹن: امریکا کے فیڈرل کمیشن برائے عالمی مذہبی آزادی نے بھارتی لوک سبھا میں شہریت کے متنازع ترمیمی بل کی مںظوری پر ردعمل کااظہار

متنازع بل کی بھارتی ایوان میں منظوری تشویش کا باعث ہے ، امریکی حکومت بل پیش کرنے والے بھارتی وزیرداخلہ امیت شاہ پرپابندی لگائے۔
امریکی کمیشن کا کہنا تھا کہ ترمیمی بل غلط سمت میں خطرناک قدم ہے، مذہب کی بنیاد پرمسلمانوں کوبل میں شامل نہیں کیا گیا، بھارتی حکومت ایک عشرے سے کمیشن کی رپورٹس نظراندازکررہی ہے۔
بھارتی پارلیمنٹ نے شہریت کا متنازع بل منظورکیا تھا، بھارتی لوک سبھا میں شہریت کا متنازع بل بھارتی وزیرداخلہ امیت شاہ نے پیش کیا تھا ، بل میں مسلمانوں کے علاوہ دیگرتارکین وطن کوشہریت دینے کی اجازت دی گئی ، جس کے حق میں 293ووٹ آئے جبکہ 82اراکین اسمبلی نے اسے مسترد کردیا۔
ترمیمی شہریت بل سے آسام میں کئی دہائیوں سے رہائش پذیرلاکھوں بنگالی مسلمان سب سے زیادہ متاثرہوں گے۔
وزیرداخلہ کا کہنا تھا کہ پڑوسی ممالک میں مسلمانوں کے خلاف مذہبی ظلم وستم نہیں ہوتا ہے، اس لئے اس بل کا فائدہ انہیں نہیں ملے گا، اگرایسا ہوا تویہ ملک انہیں بھی اس کا فائدہ دینے پر غور کرے گا۔

یہ بھی پڑھیں

اسرائیل اور بحرین کے درمیان باقاعدہ طور پر سفارتی تعلقات قائم کر لیے گئے

اسرائیل اور بحرین کے درمیان باقاعدہ طور پر سفارتی تعلقات قائم کر لیے گئے

بحرین : گذشتہ کئی دہائیوں سے بیشتر عرب ممالک نے اسرائیل کا بائیکاٹ کر رکھا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے