عراق میں مقتدا الصدر کے گھر پر راکٹ حملہ

عراق میں مقتدا الصدر کے گھر پر راکٹ حملہ

بغداد

عراق میں حکومت مخالف مظاہرین پر مسلح حملے میں 25 مظاہرین کی ہلاکت کے فوری بعد مقبول سیاسی رہنما مقتدا الصدر کے گھر پر ڈرون کے ذریعے راکٹ حملہ کیا گیا ہے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق عراق میں حالیہ انتخابات میں غیر متوقع طور پر کامیاب ہونے والے سیاسی جماعتوں کے اتحاد ’سائرون‘ کے روحانی پیشوا مقتدا الصدر کے گھر پر راکٹ حملہ کیا گیا ہے، حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا البتہ مکان کے کچھ حصے کو شدید نقصان پہنچا ہے۔

حملے کے وقت صدرسٹ موومنٹ کے سربراہ مقتدا الصدر مظاہروں میں شرکت کی وجہ سے گھر میں موجود تھے، مقتدا الصدر کے گھر پر راکٹ حملہ خیلانی اسکوائر پر جمع سیکڑوں مظاہرین پر نامعلوم مسلح افراد کی اندھا دھند فائرنگ کے واقعے کے بعد ہوا جس میں 25 افراد ہلاک اور 180 زخمی ہوگئے تھے۔

واضح رہے کہ تین ماہ سے جاری حکومت مخالف مظاہروں میں 500 سے زائد افراد ہلاک اور 1500 سے زائد زخمی ہوئے جس پر آیت اللہ سیستانی کی جانب سے نئی حکومت سازی کے اعلان کے بعد عراقی وزیراعظم عبد المہدی نے اپنا استعفیٰ دے دیا تھا جسے پارلیمان نے منظور کرلیا تھا۔

سعودی عرب، بچوں کے برتھ سرٹیفیکٹ نہ بنوانے والے پاکستانیوں کے لیے بڑی خوش خبری

یہ بھی پڑھیں

صدر رجب طیب اردوان نے فرانس کے صدر ایمانیئول میکرون’دماغی معائنہ‘ کرانے کے لیے زور دیا ہے

صدر رجب طیب اردوان نے فرانس کے صدر ایمانیئول میکرون’دماغی معائنہ‘ کرانے کے لیے زور دیا ہے

استنبول: ترک صدر رجب طلب اردوان سے سخت ردعمل دیا تھا ہفتے کو کہا تھا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے