میرکل کی تباہ کن غلطی، تارکین وطن کو داخلے کی اجازت

نومنتخب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جرمن چانسلر انگیلا میرکل کی جانب سے 10 لاکھ سے زائد تارکینِ وطن کو جرمنی میں داخلے کی اجازت دینے کے فیصلے کو ایک ‘بڑی غلطی’ قرار دیا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ مسز میرکل یورپ کی اہم لیڈر ہیں اور یورپی یونین کے لیے جرمنی اہم ذریعہ ہے۔

انھوں نے ان خیالات کا اظہار نیویارک میں موجود اپنے دفتر ٹرمپ ٹاور میں جرمن اور برطانوی اخبارات کے ساتھ اپنی خارجہ پالیسی کی تفصیلات بیان کرتے ہوئے کیا۔

مسٹر ٹرمپ نے دی ٹائمز اینڈ بلڈ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ان کی ترجیحات امریکہ کے لیے شفاف تجارت کے معاہدے کرنا اور اس کی سرحدوں کو محفوظ بنانا ہے۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ امریکہ کو دیگر دنیا کے ساتھ اپنے تجارتی خسارے پر بات کرنا ہو گی خاص طور پر چین کے ساتھ۔

انھوں نے اس بات پر زور دیا کہ ان کی انتظامیہ فری ٹریڈ کے بجائے سمارٹ ٹریڈ کو ترجیح دے۔

جب ان سے روس کے ساتھ ممکنہ معاہدوں کے بارے میں پوچھا گیا تو مسٹر ٹرمپ نے کہا کہ جوہری ہتھیار اس کا حصہ ہوں گے اور انھیں امریکی پابندیاں ختم کرنے کے بدلے میں نمایاں طور پر کم کیا جائے گا۔

نومنتخب امریکی صدر نے مشرقِ وسطیٰ کی صورتحال پر بات کرتے ہوئے کہا کہ عراق پر سنہ 2003 میں کی جانے والی چڑھائی بدترین فیصلہ تھا۔

مسٹر ٹرمپ نے برطانیہ کے یورپی یونین سے نکلنے کے فیصلے کی تعریف کی۔

‘ملک اپنی شناخت چاہتے ہیں اور برطانیہ اپنی شناخت چاہتا تھا۔’

نومنتخب امریکی صدر نے جرمن چانسلر کے حوالے سے کہا کہ انھوں نے غیرقانونی افراد کو اپنے ملک میں داخلے کی اجازت دے کر ایک تباہ کن غلطی کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

جنگل میں ہونے والی آتشزدگی پر قابو پانے کےلیے مسلح افواج کو طلب کرلیا

جنگل میں ہونے والی آتشزدگی پر قابو پانے کےلیے مسلح افواج کو طلب کرلیا

برسیلیا: رین فاریسٹ کی خاصیت رکھنے والے یہ جنگل یعنی جہاں بارشیں سب سے زیادہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے