آئندہ ماہ سے مہنگائی کی شرح میں کمی آنا شروع ہوجائے گی

آئندہ ماہ سے مہنگائی کی شرح میں کمی آنا شروع ہوجائے گی

اسلام آباد: وزارت خزانہ سے جاری ہونے والی تفصیلی بیان میں یہ دعویٰ کیا گیا کہ آئندہ ماہ سے مہنگائی کی شرح میں کمی آنا شروع ہوجائے گی تاہم یہ کس طرح ہوگا اس کا کوئی ذکر نہیں کیا گیا

گزشتہ روز جاری کیے گئے اعداد و شمار کے مطابق مجموعی مہنگائی میں اشیائے خورو نوش کی قیمتوں میں اضافہ نومبر میں مہنگائی کا بڑا سبب بنا۔
سالانہ اعتبار سے ماہ نومبر میں شہری علاقوں میں اشیائے خوراک کی قیمتوں میں 16.6 فیصد اضافہ ہوا جبکہ ماہانہ اعتبار سے یہ اضافہ 2.4 فیصد رہا اسی طرح دیہی علاقوں میں سالانہ اعتبار سے مہنگائی میں19.3 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا جبکہ ماہانہ بنیاد پر یہ اضافہ 3.4 فیصد رہا۔
شہری علاقوں میں جن اشیا کی قیمتوں میں اضافہ ہوا وہ درج ذیل ہیں: ٹماٹر (149.41 فیصد)، دال ماش (11.72 فیصد)، دال مونگ (7.79 فیصد، گندم(6.86 فیصد)، آلو(6.72 فیصد)، گندم کا آٹا(4.74 فیصد)، پھلیاں (4.53 فیصد)، پیاز (3.82 فیصد)، خشک میوہ جات(3.22 فیصد)، دال مسور (2.66 فیصد)، سرسوں کا تیل (2.49 فیصد)، دال چنا(1.04 فیصد)، گھی (1 فیصد)۔
شہری علاقوں میں جن اشیا کی قیمتوں میں کمی دیکھی گئی ان میں تازہ سبزیوں کی قیمتوں میں (11.5 فیصد، مرغی (2.28 فیصد)، چینی (1.18 فیصد) اور تازہ پھلوں کی قیمت میں 1.03 فیصد کمی ہوئی۔
دیہی علاقوں میں جن اشیا کی قیمتوں میں اضافہ ہوا وہ یہ ہیں
ٹماٹر (189.67 فیصد)، پیاز (13.83 فیصد)، گندم (10.85 فیصد)، دال مونگ (8.55 فیصد)، پھلیاں (6.2 فیصد)، آٹا (6.15 فیصد)، تازہ پھل (4.68 فیصد)، آلو(4.43 فیصد)، دال مسور (3.89 فیصد)، خشک میوہ جات (3.25 فیصد)، سوتی کپڑا(2.58 فیصد)، ثابت چنے (1.48 فیصد)، انڈے (1.31 فیصد)، مچھلی (1.3 فیصد)، تیار خوراک (1.19 فیصد)، چاول (1.02) فیصد، اور دال چنا کی قیمت میں 1.01 فیصد اضافہ ہوا۔
اسی طرح شہری علاقوں میں اشیائے ضروریات(خوراک کے علاوہ) دیگر کی قیمتوں میں سالانہ اعتبار سے 9.6 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا جبکہ دیہی علاقوں میں یہ اضافہ 9 فیصد رہا۔
خوراک کے علاوہ دیگر اشیا کی قیمتوں میں اضافے کی عمومی وجہ تیل کی قیمتوں میں اضافہ اور ایکسچینج ریٹ میں کمی سے اثر انداز ہونے والا دباؤ ہوتا ہے۔
لہٰذا خوراک کے علاوہ اشیا کی قیمتیں بھی بلند رہیں تعلیم کے حوالے سے اس میں 6.12 فیصد اضافہ ہوا کپڑوں اور جوتوں کی قیمتیں 9.37 فیصد بڑھیں۔

یہ بھی پڑھیں

31 مئی کو لاک ڈاؤن میں نرمی یا سختی کا فیصلہ کیا جائے گا

اسلام آباد : وزیراعظم عمران خان نے قومی رابطہ کمیٹی کا اجلاس 31 مئی کو …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے