ایف آئی اے کی تنظیم نو کا منصوبہ وزیراعظم کی منظوری کے لیے پیش

ایف آئی اے کی تنظیم نو کا منصوبہ وزیراعظم کی منظوری کے لیے پیش

اسلام آباد: معاون خصوصی برائے احتساب کا کہنا تھا کہ وزیراعظم فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (مالیاتی جرائم کے انسداد کے لیے کام کرنے والی بین الاقوامی تنظیم) کی ہدایات کے تحت منی لانڈرنگ کے مسئلے کا حل چاہتے ہیں

منی لانڈرنگ انسداد بدعنوانی اور اس سے متعلق دیگر جرائم پر توجہ دینے کی ذمہ داری دی ہے۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ منی لانڈرنگ کے تدارک کے سلسلے میں اقوامِ متحدہ اور سوئٹزر لینڈ جیسی طاقتوں سے رابطے کے دوران یہ بات ان کے مشاہدے میں آئی کہ منی لانڈرنگ کا مسئلہ حل کرنے کے لیے ایف آئی کی تنظیم نو انتہائی ضروری ہے۔
منی لانڈرنگ انسداد بدعنوانی اور اس سے متعلق دیگر جرائم پر توجہ دینے کی ذمہ داری دی ہے۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ منی لانڈرنگ کے تدارک کے سلسلے میں اقوامِ متحدہ اور سوئٹزر لینڈ جیسی طاقتوں سے رابطے کے دوران یہ بات ان کے مشاہدے میں آئی کہ منی لانڈرنگ کا مسئلہ حل کرنے کے لیے ایف آئی کی تنظیم نو انتہائی ضروری ہے۔
شہزاد اکبر نے بتایا کہ وہ جلد ایف آئی اے کی تنظیم نو کا منصوبہ وزیراعظم کی منظوری کے لیے پیش کردیں گے۔
ترقی پانے والے افسران کے ساتھ ایک ملاقات کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ان کی ترقی صرف میرٹ کی بنیاد پر کی گئی ہے۔
وزیراعظم کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان تاریخ کے نازک موڑ سے گزر رہا ہے اور اس صورت میں بیوروکریسی کو جانفشانی سے کام کرنا ہوگا۔
ان کا کہنا تھا کہ 60 کی دہائی میں ہمارے ملک میں مثالی گورنس تھی لیکن اب متعدد وجوہات کی بنا پر یہ دنیا کی کئی ممالک سے پیچھے رہ گیا ہے۔
آج سیاسی قیادت اور بیوروکریسی کو مل کر ملک کے مستقبل کی سمت طے کرنی ہے جس کے لیے نئی سوچ اور گڈ گورنس ضروری ہےاور اس کے لیے اپنی ذمہ داریاں قومی فریضہ اور جہاد سمجھ کر ادا کرنا ہوں گی۔

یہ بھی پڑھیں

نیب نے جعلی بینک اکاؤنٹس اسکینڈل میں 22 کروڑ 40 لاکھ روپے برآمد کرکے حکومت سندھ کے حوالے

نیب نے جعلی بینک اکاؤنٹس اسکینڈل میں 22 کروڑ 40 لاکھ روپے برآمد کرکے حکومت سندھ کے حوالے

اسلام آباد: جاوید اقبال نے سندھ کے چیف سکریٹری ممتاز علی شاہ کو 22 کروڑ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے