نیٹو سربراہی اجلاس میں فرانسیسی صدر میخواں اور ترک صدر طیب اردوان کی براہِ راست ملاقات ہوگی

نیٹو سربراہی اجلاس میں فرانسیسی صدر میخواں اور ترک صدر طیب اردوان کی براہِ راست ملاقات ہوگی

پیرس: فرانسیسی صدر میخواں نے ایک انٹرویو میں شام کے حوالے سے ترکی پرتنقید کرتے ہوئے اس کی حکمتِ عملی کو ’’احمقانہ‘‘ کہا تھا

نیٹو کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ شمالی اوقیانوس کے ممالک کی یہ تنظیم مر رہی ہے اور اس کے رکن ممالک میں باہمی تعاون کا شدید فقدان ہے۔ اس کے برعکس، میخواں کا کہنا تھا کہ یورپی ممالک کو ایک نئے اور بہتر فوجی اتحاد کی ضرورت ہے۔
ترک صدر طیب اردوان نے کہا کہ نیٹو کے بارے میں میخواں کا بیان ان کی سطحی اور بیمار سوچ کو ظاہر کرتا ہے۔ ’’فرانسیسی صدر کو چاہیے کہ وہ پہلے اپنا معائنہ کرائیں کہ کہیں وہ خود ہی ’مردہ دماغ‘ تو نہیں،‘‘ اردوان نے سخت الفاظ میں میخواں پر تنقید کرتے ہوئے کہا۔
طیب اردوان کے اس بیان پر فرانس نے شدید احتجاج کرتے ہوئے اسے فرانسیسی صدر کی ’’توہین‘‘ قرار دیا ہے۔
ترک سفارت کار کو فرانسیسی وزارتِ خارجہ میں طلب کرکے احتجاجی مراسلہ دیا گیا جس میں واضح کیا گیا تھا کہ جو کچھ بھی صدر میخواں نے کہا، وہ ایک بیان اور سرکاری مؤقف تھا جبکہ اردوان نے اس کا جواب توہین آمیز الفاظ سے دیا ہے جو انتہائی نامناسب ہے۔

یہ بھی پڑھیں

فرانس میں پنشن قوانین کے خلاف ملک بھر میں شٹر ڈاؤن رہا

فرانس میں پنشن قوانین کے خلاف ملک بھر میں شٹر ڈاؤن رہا

پیرس: فرانس میں پنشن قوانین کے خلاف ملک بھر میں شٹر ڈاؤن رہا، پندرہ لاکھ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے