نیپالی وزیراعظم بھارت کے خلاف میدان میں آگئے

نیپالی وزیراعظم بھارت کے خلاف میدان میں آگئے

کھٹمنڈو : نیپال کے وزیراعظم کے پی اولی نے کہا ہے کہ کالا پانی کا علاقہ نیپال،بھارت اورتبت کے درمیان سہ فریقی مسئلہ ہے، بھارت فوری طور پر اپنی فوج کالا پانی سے نکالے۔

تفصیلات کے مطابق نیپال کے وزیراعظم کے پی اولی نے بیان میں کہا ہے کہ اپنی ایک انچ زمین بھی کسی کے قبضے میں نہیں رہنے دیں گے، بھارت فوری طور پر کالا پانی سے نکل جائے، کالا پانی نیپال کا حصہ ہے۔

اولی کا کہنا تھا کہ اس سرحدی تنازعے کو بات چیت کے ذریعے حل کرنا چاہتے ہیں، اپنی زمین کی حفاظت ہماری ذمہ داری ہے، اگر ہم کسی اور کی زمین نہیں چاہتے تو ہمارے ہمسایہ ممالک کو بھی اپنی فوجیوں کو واپس بلانا چاہیے۔‘

نیپالی وزیراعظم نے کہا یہ نقشے کی بات نہیں ہے، اپنی زمین واپس لینے کا معاملہ ہے، ہماری حکومت زمین واپس لے گی،ان مسائل کا حل کشیدگی سے نہیں ہو سکتا، نیپالی حکومت نیپالی عوام کی ہے اور ہم کسی کو اپنی زمین کا ایک انچ بھی نہیں لینے دیں گے۔

اس سے قبل نیپالی وزیر اعظم اولی پر تنقید ہو رہی تھی کہ وہ کالا پانی کے معاملے کا ذکر نہیں کر رہے ہیں۔

خیال رہے بھارت نے نئے نقشے میں کالا پانی کے علاقے کو اپنے حصے کے طورپردکھایا ہے، بھارت کے نقشے میں کالا پانی کو اپنا علاقہ قراردینے کے بعد نیپال میں بھارت کیخلاف مظاہرے کئے گئے۔

اس معاملے پر حکمران جماعت اور حزب اختلاف دونوں متحد ہیں جبکہ نیپال کی وزارت خارجہ نے ایک پریس ریلیز جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ کالا پانی نیپال کا حصہ ہے۔

اب نوکریاں مہیا کرنے کا مقصد حاصل ہو پائے گا: اسد عمر

یہ بھی پڑھیں

فرانس میں پنشن سے متعلق نئے قانون کے خلاف آج پہیہ جام ہڑتال کی جا رہی ہے

فرانس میں پنشن سے متعلق نئے قانون کے خلاف آج پہیہ جام ہڑتال کی جا رہی ہے

فرانس: دارالحکومت پیرس میں 78 فی صد اسکول بند رہیں گے، ہڑتال کے باعث فرانس …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے