بے گھر افراد کے رات میں سونے کے لیے مسجد کے دروازے کھول دیے

بے گھر افراد کے رات میں سونے کے لیے مسجد کے دروازے کھول دیے

سنگا پور: سنگا پور کی نیشنل یونیورسٹی کی جانب سے ایک مطالعہ کیا گیا جس کے بعد یہ معلوم ہو اکہ اس ملک میں تقریباً 1000لوگ بے گھر ہیں جو کہ سڑکوں اور گلیوں میں سونے پر مجبور ہیں

زیادہ تر بے گھر افراد میں مردوں کی تعداد زیادہ ہے جب کہ ان افراد کے بے گھر ہونے کی سب سے بڑی وجہ بے روزگاری، کم تنخواہیں اور گھریلو مسائل ہیں۔
اس تمام تر صورتحال کو مدِنظر رکھتے ہوئے ’مسجدِ سلطان‘ سنگاپور کی پہلی مسجد ہے جو بے گھر افراد کو جزوی طور پر ٹھکانا فراہم کرتی ہے۔
یہ مسجد رات 10بجے سے صبح 7 بجے تک بے گھر افراد کو سونے کے لیے چھت فراہم کرتی ہے۔
مسجد سلطان کے سوشل ڈیولیپمنٹ آفیسر محد آئزالدین جمال الدین کا کہنا ہے کہ ’مسجد ایک عبادت گاہ ہے اور ہم یہ سمجھتے ہیں کہ یہ ہماری ذمہ داری ہے کہ ہم ان بے گھر افراد کی مدد کریں۔
یہ جگہ مرکزی عمارت اور نماز ہال سے دور مسجد کے ساتھ ہی انیکسی بلڈنگ کے تہہ خانے میں بنائی گئی ہے۔
اس کمرے میں 5 افراد ایک ساتھ باآسانی آرام کر سکتے ہیں جس میں گدے، تکیہ اور پنکھا لگا ہوا ہے اور ساتھ ہی پانی کی بوتلیں بھی موجود ہیں۔
مسجد کی انتظامیہ نے عوام کو یقین دلایا ہے کہ یہ نیا اقدام مسجد میں آنے والوں کو پریشان نہیں کرے گا اور نہ ہی عبادت گاہ کسی رکاوٹ کا باعث بنے گا۔
اس جگہ کو استعمال کرنے کے لیے بے گھر افراد کو مسجد کے سیکیورٹی گارڈ کے پاس رجسٹریشن کروانی ہوتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

فرانس میں پنشن سے متعلق نئے قانون کے خلاف آج پہیہ جام ہڑتال کی جا رہی ہے

فرانس میں پنشن سے متعلق نئے قانون کے خلاف آج پہیہ جام ہڑتال کی جا رہی ہے

فرانس: دارالحکومت پیرس میں 78 فی صد اسکول بند رہیں گے، ہڑتال کے باعث فرانس …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے