سندھ بھر میں کتوں کی بھرمار کے باعث شہریوں کی زندگی کو خطرہ لاحق

سندھ بھر میں کتوں کی بھرمار کے باعث شہریوں کی زندگی کو خطرہ لاحق

کراچی: حکومت سندھ ، محکمہ صحت اور بلدیہ عظمی شہریوں کو بہتر علاج کی سہولیات سمیت کتوں کی بڑھتی تعداد پر قابو پانے میں تاحال ناکام ہیں

کراچی سمیت سندھ بھر میں آوارہ کتوں کی بہتات سے شہریوں کی زندگی خطرے میں ہے، آوارہ کتوں کے کاٹنے سے سگ گزیدگی کے واقعات بڑھ گئے ہیں ، سندھ کے سرکاری اسپتالوں میں اینٹی ریبیز ویکسین کی عدم دستیابی، اسپیشلسٹ نہ ہونے اور علاج کی سہولیات بہتر نہ ہونے کے باعث عوام علاج کے لیے ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہیں۔
محکمہ صحت اور ضلعی بلدیاتی اداروں کی کارکردگی دعوؤں تک محدود ہے، آوارہ کتوں کی افزائش روکنے اور اس میں کمی لانے کے اقدامات سامنے نہیں آسکے، محکمہ صحت سندھ کے مطابق رواں سال صوبے بھر میں ایک لاکھ 86 ہزار سگ گزیدگی واقعات رپورٹ ہوئے ہیں جن میں سے 30 ہزار سے زائد کیسز کراچی سے رپورٹ ہوئے ہیں۔ اس وقت 13 ہزار 748 اینٹی ریبیز ویکسین موجود ہیں، کراچی کے سرکاری اسپتالوں جناح، سول اور انڈس اسپتال میں اینٹی ریبیز ویکسین موجود ہیں جن کی تعداد ضرورت سے انتہائی کم ہے، جناح اسپتال میں 1500 وائلز ، این آئی سی ایچ میں87، سول اسپتال میں 491 وائلز موجود ہیں، جناح اسپتال کی ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر سیمی جمالی کے مطابق اس وقت جناح اسپتال میں 1500 وائلز ہیں جبکہ روزانہ کی بنیاد پر ریبیز کے کیسز رپورٹ ہورہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

محمدی دربار کا منصوبہ ہے کہ عراق کے شہر نجف سے کربلا تک کی سڑک پر پودے لگائے جائیں

محمدی دربار کا منصوبہ ہے کہ عراق کے شہر نجف سے کربلا تک کی سڑک پر پودے لگائے جائیں

کراچی: مسلمانوں کے نزدیک مقدس سمجھے جانے والے دو شہروں نجف اور کربلا کو ملانے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے