ہدیٰ المثنیٰ پیدائش اگرچہ امریکا کی ہے مگر امریکی حکومت اسے اپنا شہری تسلیم نہیں کرتی

ہدیٰ المثنیٰ پیدائش اگرچہ امریکا کی ہے مگر امریکی حکومت اسے اپنا شہری تسلیم نہیں کرتی

نیویارک: ہدیٰ المثنیٰ نیو جرسی میں یمن سے آئے ہوئے ایک سفارتکار کے ہاں پیدا ہوئی تھیں جب کہ ان کی پرورش الاباما میں ہوئی۔ کچھ عرصہ پیشتر ہدیٰ نے شام میں داعش میں شمولیت اختیار کر لی تھی

ہدیٰ کے بیرون ملک رہنے کی وجہ سے امریکی حکومت نے فیصلہ کیا تھا کہ وہ امریکی شہری نہیں ہے کیونکہ جب وہ پیدا ہوئی تو اس وقت ان کے والد امریکی شہری نہیں بلکہ ایک غیر ملکی سفارت کار تھے۔ حکومت نے ہدیٰ کا پاسپورٹ منسوخ کر دیا تھا۔
ہدیٰ کے وکیل چارلس سوئفٹ نے بتایا کہ انہوں نے فیصلہ کو کالعدم کرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔ جب کہ خاتون کے اہل خانہ کے وکیل نے بتایا کہ وہ اپیل کرنے کا ارادہ کر رہے ہیں۔
فروری میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اعلان کیا تھا کہ انہوں نے داعش میں شامل ہونے والی ہدیٰ المثنیٰ کی امریکا واپسی روکنے کا حکم دیا تھا، جبکہ ان کے وکیل نے تصدیق کی ہے کہ وہ ایک امریکی شہری ہیں۔
ٹرمپ نے اس وقت ایک ٹویٹ میں کہا تھا کہ میں نے وزیرخارجہ مائیک پومپیو کو حکم دیا کہ شام میں ایک جیل میں قید ہدیٰ المثنیٰ کو امریکا نہ آنے دیا جائے۔
جارج واشنگٹن یونیورسٹی میں انسدادِ انتہا پسندی کے منصوبے کے مطابق، ہدیٰ امریکا میں یمن سے آنے والے والدین کے ہاں پیدا ہوئی تھیں۔ اس کی پیدائش اگرچہ امریکا کی ہے مگر امریکی حکومت اسے اپنا شہری تسلیم نہیں کرتی۔

یہ بھی پڑھیں

روسی حکام نے غربت سے نبرد آزما شہر میں 3 لاکھ ڈالر کا کرسمس ٹری نصب کردیا

روسی حکام نے غربت سے نبرد آزما شہر میں 3 لاکھ ڈالر کا کرسمس ٹری نصب کردیا

ماسکو: سائبیریا کے ایک صنعتی شہر میں حکومت کی جانب سے کرسمس کے موقع پر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے