پمز اسپتال نے وکلا کی ملاقات کے لیے 2 دن مقرر کیے ہیں

پمز اسپتال نے وکلا کی ملاقات کے لیے 2 دن مقرر کیے ہیں

اسلام آباد: کیس کی سماعت احتساب عدالت کے جج اعظم خان نے کی، آصف زرداری اورفریال تالپور کے وکیل فاروق ایچ نائیک عدالت میں پیش ہوئے تاہم سابق آصف زرداری کو احتساب عدالت میں پیش نہ کیا جاسکا

آصف زرداری سے ملاقات کی درخواست دائر کی ، وکیل نیب نے کہا پمز اسپتال نے وکلا کی ملاقات کے لیے 2 دن مقرر کیے ہیں، اہلخانہ آصف علی زرداری سے 3 دن اسپتال میں ملاقات کرسکتے ہیں جبکہ آصف زرداری سےملاقات کے لیے 5دن مقرر ہیں، جس پر فاروق ایچ نائیک کا کہنا تھا کہ 5دن ملاقات کی اجازت ہےتوہم درخواست واپس لے لیتے ہیں۔
جج نے استفسار کیا ملزمان کہاں ہیں؟ انور مجید کو لایا گیایا نہیں؟ وکیل انور مجید نے بتایا وہ بیمارہیں کراچی میں ان کا آپریشن ہونا ہے۔
دوران سماعت آصف زرداری نے کراچی سے علاج کیلئے درخواست دائر کر دی، آصف زرداری نے وکیل فاروق ایچ نائیک کے ذریعے درخواست دائر کی، درخواست میں کہا گیا صحت تشویشناک ہے، مرضی سے علاج کی اجازت دی جائے، کراچی سے علاج کرانا چاہتے ہیں۔
آصف زرداری کی کراچی سےعلاج کرانے کی درخواست پر نیب نے اعتراض اٹھایا ، نیب پراسیکیوٹر نے کہا آپ ایگزیکٹو سے اجازت لیں، جس پر وکیل سردار لطیف کھوسہ کا کہنا تھا کہ ہم ایگزیکٹو سے بھیک نہیں مانگیں گے، ہمارا حق ہے جو ہم عدالت سے مانگ رہے ہیں، ایک مریض کو باہر بھیجنے کو تیار ہیں مگر ہمیں کہتے ہیں ایگزیکٹیو کے پاس جائیں۔
سردار لطیف کھوسہ نے کہا ہمیں عدالت نے جوڈیشل ریمانڈ پر بھیجا ہے ، ہم کراچی علاج کے لئے درخواست بھی اسی عدالت کو دیں گے، یہ تاریخ کا حصہ بنے گا کہ کیس کراچی میں مقدمہ پنجاب میں چل رہا ہے، علاج ہو گا زندگی ہو گی تو مقدمات ہوں گے۔
نیب پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ یہ لوگ درخواست اڈیالہ جیل کو دیں ایگزیکٹو کو دیں، عدالت کے دائرہ اختیار میں نہیں آتا، انہوں نے چار ڈاکٹرز کی فہرست دی ،ان کی مرضی نہیں چل سکتی۔

یہ بھی پڑھیں

فل کورٹ اجلاس میں سپریم کورٹ کے تمام ججزشرکت کریں گے

فل کورٹ اجلاس میں سپریم کورٹ کے تمام ججزشرکت کریں گے

اسلام آباد: چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کے اعزاز میں فل کورٹ ریفرنس 20 دسمبرکوکورٹ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے