بلاول ہاؤس کراچی کے اطراف بنگلوں کی زبردستی خریداری

بلاول ہاؤس کراچی کے اطراف بنگلوں کی زبردستی خریداری

کراچی: زرداری گروپ کی جانب سے بلاول ہاؤس کراچی کے اطراف بنگلوں کی زبردستی خریداری کے معاملے پر نیب کی تحقیقات میں تیزی آگئی

نیب نے زرداری گروپ کو مکان فروخت کرنے والے افراد سے رابطہ کیا ہے جواب میں 9 پلاٹ مالکان میں سے 6 نے کمبائنڈ انویسٹی گیشن ٹیم کو مبینہ طور پر زبردستی مکانات فروخت کرنے کے بیانات ریکارڈ کرائے ہیں۔
زمینوں کے معاملات کا سسٹم چلانے والے یونس سیٹھ کے بھائی جبار کے نام پر بھی دو پلاٹ نکل آئے، نیب نے پلاٹ مالکان سے زرداری گروپ کو ادائیگی اور پلاٹ کی ملکیت کے ثبوت بھی طلب کرلیے جس میں پلاٹ کے اصل کاغذات سیل ڈیڈ اور موٹیشن شامل ہیں۔
پلاٹوں کی مجموعی مالیت 40 ارب روپے سے زائد بنتی ہے، زبردستی مکانات خریدے جانے کے معاملے پر نیب نے تحقیقات کا آغاز کر رکھا ہے، یہ مکانات زرداری گروپ کمپنی نے خریدے تھے جس میں سابق صدر آصف علی زرداری کے والدین، بہنیں اور بلاول بھٹو شئیر ہولڈر ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

ایس بی سی اے انجینئرزنے بارشیں شروع ہوتے ہی عمارتوں کا سروے کیا

ایس بی سی اے انجینئرزنے بارشیں شروع ہوتے ہی عمارتوں کا سروے کیا

کراچی: سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے صدر ٹاؤن ،لیاری ٹاؤن اور لیاقت آباد ٹاؤن میں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے