دو سے زائد بچوں کے والدین پر سرکاری ملازمت کے دروازے بند

دو سے زائد بچوں کے والدین پر سرکاری ملازمت کے دروازے بند

نئی دہلی: بھارتی ریاست آسام کی حکومت نے دو سے زائد بچوں کے والدین پر سرکاری ملازمت کے دروازے بند کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق بھارتیہ جنتا پارٹی کی حکومت نے فیصلہ کیا کہ جس شہری کے دو سے زائد بچے ہوں گے وہ سرکاری ملازمت کے اہل نہیں ہوں گے۔

بی جے پی حکومت نے فیصلہ کیا کہ یکم جنوری 2021 کے بعد دو سے زائد بچوں والے والدین سرکاری ملازمت حاصل نہیں کرسکیں گے اور نہ ہی وہ قانون کے تحت درخواست دے سکیں گے۔

وزیراعلیٰ آسام کے ترجمان کا کہنا تھا کہ پابندی کا فیصلہ گزشتہ روز ہونے والے کابینہ اجلاس میں کیا گیا، اس اقدام کا مقصد ریاست میں تیزی سے بڑھتی ہوئی آبادی کو روکنا ہے۔

میڈیا رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کی ریاستی حکومت بڑھتی ہوئی آبادی کے حوالے سے اقدامات کررہی ہے، یہی وجہ ہے کہ گزشتہ دنوں آسان کی وزیر صحت و تعلیم ہمانتا نے مطالبہ کیا تھا کہ دو بچوں کی پالیسی کا اطلاق انتخابی قوانین پر بھی کیا جائے۔

انہوں نے مطالبہ کیا تھا کہ دو سے زائد بچے والوں کو اسمبلی کا ٹکٹ نہ دیا جائے اور اُسے تاحیات نااہل قرار دیا جائے۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ آسام میں مسلمانوں کی بڑی تعداد آباد ہے اور اس قانون سے سب سے زیادہ وہی متاثر ہوں گے۔ قبل ازیں بی جے پی حکومت نے مسلمانوں اور دیگر اقلیتوں کے خلاف ہتھکنڈے استعمال کرتے ہوئے 19 لاکھ سے زائد افراد کی شہریت کو ختم کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

‘‏مصباح الحق کے ساتھ بھی جلد سرفراز احمد والا معاملہ ہو گا’

یہ بھی پڑھیں

عہدے کا بے جا استعمال، مواخذہ شروع ٹرمپ پریشان

عہدے کا بے جا استعمال، مواخذہ شروع ٹرمپ پریشان

امریکی صدر ٹرمپ پر اپنے دائرہ کار سے تجاوز، عہدے کے بے جا استعمال اور …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے