تفتان بارڈر پر ہیلتھ پوسٹ کے قیام پر اتفاق

تفتان بارڈر پر ہیلتھ پوسٹ کے قیام پر اتفاق

اسلام آباد: تہران میں عالمی ادارہ صحت کی ریجنل کمیٹی کے 66ویں اجلاس کے دوران وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا اور ایران کے وزیر صحت اور طبی تعلیم سعید نمکی کی ملاقات کے بعد ہیلتھ پوسٹ کے قیام کا معاہدہ طے پایا

سیکریٹری برائے قومی ادارہ صحت ڈاکٹر اللہ بخش ملک نے کہا کہ موجودہ دور میں ایک ملک سے دوسرے ملک تک وائرس اور امراض کی منتقلی ایک معمول بن گیا ہے۔
’ زائرین کی ایک بڑی تعداد ایران میں مختلف مقامات کا دورہ کرتے ہیں اور پھر عراق جاتے ہیں ، ایران جاتے ہوئے اور پاکستان واپسی پر ان کی جانچ کی جائے گا اور اگر انفیکشن پایا گیا تو دیگر افراد کو بیماریوں سے محفوظ رکھنے کے لیے انہیں ایک خاص مدت کے لیے الگ جگہ رکھنے کو یقینی بنایا جائے گا۔
ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر اللہ بخش ملک نے کہا کہ وزارت صحت نے وزارت داخلہ سے بارڈر کمپلیکس پر ہیلتھ پوسٹ کے قیام سے متعلق زمین فراہم کرنے کی درخواست دی ہے۔،
انہوں نے کہا کہ ’ ہیلتھ پوسٹ کو ایک ماہ کے اندر فعال بنایا جائے گا‘۔
وزارت صحت سے جاری بیان کے مطابق ڈاکٹر ظفر مرزا نے موجودہ حکومت کی جانب سے ہیلتھ سیکٹر میں کیے جانے والے اقداامات سے آگاہ کیا جس میں سماجی صحت تحفظ جیسے بنیادی اقدامات کو ملک بھر میں ضرورت مند خاندانوں تک توسیع دی گئی ہے۔
ایرانی وزیر صحت نے پاکستان کے نظامِ صحت کو مضبوط بنانے کے لیے ہرقسم کا تعاون فراہم کرنے کی خواہش کا اظہار کیا۔

یہ بھی پڑھیں

پاکستان، یونیسکو ایگزیکٹو بورڈ کا دوبارہ رکن منتخب ہوگیا

پاکستان، یونیسکو ایگزیکٹو بورڈ کا دوبارہ رکن منتخب ہوگیا

اسلام آباد: ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر فیصل نے سماجی رابطے کی ویب پر ٹوئٹ کرتے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے