پاکستان اور برطانیہ کے درمیان تعلقات کی ایک دیرینہ تاریخ ہے

پاکستان اور برطانیہ کے درمیان تعلقات کی ایک دیرینہ تاریخ ہے

اسلام آباد: تقسیم ہند کے بعد سے برطانوی شاہی خاندان کے کئی افراد نے پاکستان کے دورے کیے ہیں
برطانوی شاہی خاندان ہمیشہ رہا پاکستان کا گرویدہ

ملکہ الزبتھ دوم1961 میں پہلی بار پاکستان آئیں، اس وقت کے صدر ایوب خان نے ان کا استقبال کیا۔پورا کراچی بھی ملکہ کےلئے سڑکوں پر موجود تھا۔
انہوں نے پاکستان کی سیر کی۔بادشاہی مسجد کا بھی دورہ کیا۔ 1997 میں دوسری بار پاکستان کا دورہ کیا۔ پاکستان کی آزادی کے50سال مکمل ہونے کی تقریبات میں حصہ لیا، پارلیمان کے مشترکہ اجلاس سے بھی خطاب کیا۔
شہزادی ڈیانا 3 بار پاکستان آئیں۔ انہوں نے پاکستان کے طول وعرض کا سفر کیا، اپنے سادہ انداز اور مقامی فیشن کو اپنانے کے شوق سے شہزادی نے پاکستانی عوام کے دل جیت لیے۔
انہوں نے لاہور میں عمران خان کی سابق اہلیہ جمائمہ کی دعوت پر شوکت خانم اسپتال کےلئے فنڈ ریزنگ میں بھی حصہ لیا، اور شوکت خانم اسپتال کی افتتاحی تقریب میں بھی شرکت کی۔
شہزادہ چارلس اور ڈچس آف کارنوال کمیلا پارکر 2006 میں پاکستان کے دورے پر آئے۔ انہوں نے شمالی علاقے ہنزہ اور سکردو کی سیر کی۔2005 کے زلزلے کے بعد تباہی سے نمٹنے کےلئے کیے جانے والے اقدامات کا بھی جائزہ لیا، شاہی مہمانوں نے بادشاہی مسجد بھی دیکھی۔

یہ بھی پڑھیں

مختلف علاقوں میں زلزلے کے جھٹکے محسوس

مختلف علاقوں میں زلزلے کے جھٹکے محسوس

اسلام آباد: ملک کے مختلف علاقوں میں زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے ہیں جن …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے