پاکستان ایف اے ٹی ایف کی ’گرے لسٹ‘ سے نکلنے کی کوشش کررہا ہے

پاکستان ایف اے ٹی ایف کی ’گرے لسٹ‘ سے نکلنے کی کوشش کررہا ہے

پیرس: پاکستانی وفد کی سربراہی وفاقی وزیر برائے اقتصادی امور حماد اظہر کررہے ہیں، جو ایف اے ٹی ایف کی ہدایات کی روشنی میں دہشت گردوں کی مالی معاونت اور منی لانڈرنگ روکنے کے لیے اٹھائے گئے حکومتی اقدامات سے آگاہ کریں گے

ایف اے ٹی ایف ایک ہفتے پر محیط اجلاس کے دوران حکومتِ پاکستان کے رواں برس اپریل تک اٹھائے گئے اقدامات کا جائزہ لے گی جو 13 اکتوبر سے 16 اکتوبر تک جاری رہے گا۔
مذکورہ تنظیم پاکستان کے ساتھ ساتھ ایران اور دیگر ممالک کی پیش رفت کا بھی جائزہ لے گی ’جن کا مالیاتی نظام خطرات کی زد میں ہے‘ جس کے بعد 18 اکتوبر کو بیان جاری کیا جائے گا۔
پاکستان ایف اے ٹی ایف کی ’گرے لسٹ‘ سے نکلنے کی کوشش کررہا ہے جسے گزشتہ برس انسداد منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت کے خاتمے میں ناکامی پر اس میں شامل کیا گیا تھا۔
اس اجلاس میں دہشت گردی اور جرائم سے منسلک مالیاتی نظام کو روکنے اور عالمی تحفظ اور سیکیورٹی کے حوالے سے بات چیت کی جائے گی۔
اجلاس میں 205 ممالک کے نمائندوں کے ساتھ ساتھ عالمی مالیاتی فنڈ، اقوامِ متحدہ، عالمی بینک اور دیگر تنظیموں کے اراکین شرکت کریں گے۔
اے پی جی، ایف اے ٹی ایف کی ایک ذیلی تنظیم ہے جس کے اراکین کو انسداد منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت کی روک تھام کے حوالے سے باہمی تشخیص کے عمل سے گزرنا ضروری ہے۔

یہ بھی پڑھیں

فرانس میں پنشن قوانین کے خلاف ملک بھر میں شٹر ڈاؤن رہا

فرانس میں پنشن قوانین کے خلاف ملک بھر میں شٹر ڈاؤن رہا

پیرس: فرانس میں پنشن قوانین کے خلاف ملک بھر میں شٹر ڈاؤن رہا، پندرہ لاکھ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے