27 دسمبر کے بعد نواز شریف کولگ پتہ جائیگا کہ اپوزیشن کیا ہوتی ہے، بلاول

کراچی: پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ 4 مطالبات نہیں مانے جاتے تو میں تحریک چلاؤں گا اور میں سچ پر سیاست کرتاہوں تحریک کا کہا ہے تو چلاؤں گا۔

کراچی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ (ن) لیگ کو اب تک بہت وقت دے دیا، حکومت ہمارا نہیں پاکستان کے عوام کا مذاق اڑارہی ہے، مسلم لیگ ن کوئی ایک مطالبہ بھی ماننے کو تیارنہیں جب کہ میاں صاحب منتخب وزیراعظم ہیں اس لیے ان کوجواب دینا ہوگا، وزیراعظم نے اسمبلی فلورپرپاناما معاملے کی تحقیقات خود سے شروع کرنے کی پیشکش کی لیکن وہ اپنی دولت چھپانے میں لگے ہوئے ہیں۔ میرے اوروزیراعظم نواز شریف کے لیے ایک قانون ہونا چاہیے، نوازشریف تین بار وزیراعظم منتخب ہوئے ہیں اوراگروہ جواب دینے پرراضی نہیں توجمہوری وزیراعظم نہیں۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ 27 دسمبرکواپنے چارمطالبات سے متعلق فیصلہ کریں گے اوراس دن وزیراعظم نواز شریف کو لگ پتا جائے گا،  پیپلزپارٹی ملک کی واحد سیاسی جماعت ہے جس کی جڑیں پورے ملک میں ہیں، ہم نے حکومت سے 4 مطالبات کیے لیکن وہ ایک بھی ماننے کوتیارنہیں اوراب ہم حکومت سے درخواست نہیں کریں گے کیونکہ اب بہت ہوچکا یہ لوگ مذاق کررہے ہیں، جمہوری طورپراحتساب چاہتے ہیں۔

بلاول کا کہنا تھا کہ ہم نے اپوزیشن جماعتوں اور حکومت سے مذاکرات کیے، یوٹرن والے ہوں یا سیاستدان سب کے ساتھ ورکنگ ریلیشن شپ رکھنا ہے، 4 مطالبات نہیں مانے گئے تو میں تحریک چلاؤں گا اورمیں سچ پر سیاست کرتا ہوں تحریک کا کہا ہے تو چلاؤں گا۔ بلاول بھٹوزرداری نے پنجاب کے حوالے سے کہا کہ پنجاب میں امن و امان کی صورت حال بہت خراب ہے اور ڈرہے کہ پنجاب میں صورتحال مزید خراب ہوجائےگی، لاہور اور ملک کا بجٹ دیکھ کر ملک میں نا انصافی کا پتا چلتا ہے۔

اس سے قبل پاکستان پیپلزپارٹی کے چئیرمین بلاول بھٹوزرداری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں کہا کہ حکومت نیشنل ایکشن پلان پر عمل در آمد کرنے میں ناکام ہوگئی ہے جس کے نتائج چکوال میں ہونے والے واقعے کی صورت میں سامنے آرہے ہیں، حکومت نیشنل ایکشن پلان پر مکمل عمل درآمد کو یقینی بنائے۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ حکومت پارلیمنٹ کے سامنے جواب دہ ہونے سے خوفزدہ ہے تو پھر ہم سڑکوں پر آئیں گے اور ہر طرف ’’گو نواز گو‘‘ کے نعرے بلند ہوں گے۔

 

یہ بھی پڑھیں

کب تک جھوٹے وعدوں پراعتبار کرو گے

کب تک جھوٹے وعدوں پراعتبار کرو گے

کراچی : مصطفیٰ کمال کا کراچی کے شہریوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے