ہارورڈ یونیورسٹی میں بینظیر بھٹو لیڈرشپ پروگرام کا آغاز

سابق وزیراعظم بے نظیربھٹو کے کلاس فیلوز کی جانب سے بنائی گئی تنظیم کلاس اچیونگ چینج ٹوگیدر کے تحت شروع کیا گیا ہے۔

بے نظیربھٹولیڈرشپ پروگرام میں مسلمان ممالک کی خواتین کو ترجیح دی جائے گی، پروگرام کی تکمیل پر پروگرام میں شریک خواتین اپنے ممالک واپس جاکر اپنے اپنے شعبوں میں مزید بہتری اور تبدیلی کے لئے کام کریں گی۔

پروگرام کا آغازمسلمان ممالک میں قیادت آج کے دورمیں بے نظیر کیا کرتیں کے عنوان سے منعقد اجلاس سے کیا گیا، پروگرام میں لوگ دوہزاراٹھارہ میں آنا شروع ہوں گے۔

اس پروگرام کا مشاورتی بورڈ ابھی تیار کیا جا رہا ہے اور فی الحال اس میں بینظیر بھٹو کی بہن صنم بھٹو، کمل چین، سینیٹر ایل فرینکن، سابق سفیر پیٹر گیلبرتھ، کروئیشیا کی صدر کولنڈا گریبر اور سابق نائب گورنر کیتھلین کینیڈی شامل ہیں۔

واضح رہے کہ سابق وزیراعظم بینظیر بھٹو  27 دسمبر 2007 کو پنجاب کے شہر راولپنڈی میں ایک خودکش دھماکے میں شہید ہوگئی تھی ، وہ پاکستان کی دو مرتبہ وزیر اعظم رہ چکی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

امریکہ اور چین کے تجارتی مذاکرات ناکام

امریکہ اور چین کے تجارتی مذاکرات ناکام

چین کے دفتر خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ امریکہ اور چین کے تجارتی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے