یورپی پارلیمنٹ کا بھارت سے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق بحال کرنے کا مطالبہ

یورپی پارلیمنٹ کا بھارت سے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق بحال کرنے کا مطالبہ

یورپی پارلیمنٹ میں 12 سال بعد مسئلہ کشمیر پر بحث کی گئی جس میں ارکان نے مسئلہ کشمیر پر بحث کی اور مقبوضہ وادی میں بھارتی جارحیت، انسانی حقوق کی خلاف ورزی اور ذرائع مواصلات کی بندش کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔

یورپی یونین کی خارجہ امور کی سر براہ فیڈریکا موغیرینی کا بیان وزیر توپرائینن نے پڑھ کر سنایا جس میں کہا گیا کہ بھارت کو بتا دیا گیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق بحال کرے، سیاسی کارکن رہا کیے جائیں، بھارت اور پاکستان مسئلہ کشمیر بات چیت سے حل کریں۔

چیئرپرسن انسانی حقوق کمیٹی ماریا ایرینا نے کہا کہ مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں ہورہی ہیں، وہاں 10 لاکھ فوج موجود ہے۔

بحث کے دوران کئی ارکان نے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال قیامت خیز قرار دی جبکہ لبرل پارٹی کے ارکان نے بھی بھارتی اقدامات غیرقانونی قرار دیے۔

رابرٹ او برائن امریکا کے نئے مشیر قومی سلامتی مقرر

یہ بھی پڑھیں

امریکہ کے ممنوعہ میزائلی تجربے پر روس کا رد عمل

امریکہ کے ممنوعہ میزائلی تجربے پر روس کا رد عمل

امریکہ کے ممنوعہ میزائلی تجربے پر روس نے سخت رد عمل کا اظہار کیا ہے۔ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے