قصور سے اغواء تین بچوں کی لاشیں مل گئیں

قصور سے اغواء تین بچوں کی لاشیں مل گئیں

قصور کے علاقے چونیاں میں ڈھائی ماہ کے دوران اغواء ہونے والے تین بچوں کی لاشیں مل گئیں جنہیں زیادتی کے بعد قتل کر کے لاشیں زمین میں دبائی گئیں۔

قصور کے قریب چونیاں شہر کے مختلف مقامات سے اغوا کیے گئے تین بچوں کی لاشیں جھاڑیوں سے مل گئیں، پولیس کے مطابق اغوا اور قتل کیے گئے بچوں میں فیضان، علی حسنین اور سلمان شامل ہیں، فیضان گزشتہ روز جبکہ سلمان اور علی حسنین ڈھائی ماہ قبل اغوا کیے گئے تھے، رانا ٹاؤن چونیاں کا رہائشی 12 سال کا بچہ عمران اب تک لاپتا ہے۔

پولیس کے مطابق ڈھائی ماہ کے دوران تین بچے آٹھ سالہ علی حسنین ، سلمان اور نو سالہ فیضان اغواء ہوئے۔

بچوں کی لاشیں اور ہڈیاں انڈسٹریل ایریا میں ریت کے ٹیلوں میں دبا دی گئی تھیں۔

پولیس کے مطابق تینوں لاشیں نکال کر پوسٹ مارٹم کیلئے اسپتال منتقل کر دی گئی ہیں، لاشوں کی حالت بہت خراب ہو چکی ہے اس لیے ان کا ڈی این اے ٹیسٹ اور فرانزک کرایا جائے گا۔

پولیس کے مطابق اسی عرصے میں اغوا ہونے والا 12 سالہ عمران تاحال لاپتہ ہے جس کی تلاش جاری ہے ۔

پولیس نے ملزمان کی گرفتاری کے لیے سرچ آپریشن شروع کر دیا ہے۔

وزیراعظم کا سعودی ولی عہد کو فون، تیل تنصیبات پر حملے کی مذمت

یہ بھی پڑھیں

عدالت نے خواجہ برادران کی عائد جرم ختم کرنے کی درخواست بھی مسترد کردی

عدالت نے خواجہ برادران کی عائد جرم ختم کرنے کی درخواست بھی مسترد کردی

لاہور:احتساب عدالت میں پیراگون ہاؤسنگ کیس کی سماعت ہوئی جس سلسلے میں نیب نے خواجہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے