ہفتے میں 2 روز ملاقاتوں کی اجازت دینے کی درخواستیں مسترد کردی

ہفتے میں 2 روز ملاقاتوں کی اجازت دینے کی درخواستیں مسترد کردی

اسلام آباد: سماعت میں سردار لطیف کھوسہ کی معاون وکیل نے موقف اپنایا کہ عدالت نے قانونی ٹیم میں سردار لطیف کھوسہ، شائستہ کھوسہ،شہباز کھوسہ جبکہ اہلِ خانہ میں بلاول، بختاور، آصفہ بھٹو زرداری اور رخسانہ بنگش کو ہفتے میں ایک دن ملنے کی اجازت دے رکھی ہے

ملاقات کے لیے پیر کا دن آصف زرداری اور ہفتے کا دن فریال تالپور کے لیے مختص کیا گیا ہے۔
معاون وکیل نے استدعا کی کہ کراچی میں کیسز کے باعث اگر متعلقہ دن ملاقات نہ کر سکیں تو پورا ہفتہ انتظار کرنا پڑتا ہے لہٰذاعدالت ہفتے میں 2 دن ملاقات کرنے کا حکم دے۔
عدالت نے درخواست پر دلائل سن کر فیصلہ محفوظ کرلیا جسے کچھ دیر بعد سناتے ہوئے ہفتے میں 2 روز ملاقاتوں کی اجازت دینے کی درخواستیں مسترد کردی گئیں۔
عدالت نے ایک بار پھر اپنا فیصلہ برقرار رکھتے ہوئے ہدایت کی کہ دونوں ملزمان سے ہفتے میں صرف ایک ہی روز ملاقات کی جاسکتی ہے۔
اس سے قبل احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے ریاستی خرچ پر آصف علی زرداری کو ‘اے’ کلاس سہولیات فراہم کرنے کی درخواست کو بھی مسترد کردیا تھا۔
تاہم عدالت نے انہیں اپنے ذاتی خرچ پر مختلف سہولیات فراہم کرنے یا ان کے سیل میں اُن چیزوں کے استعمال کی اجازت دی تھی۔
16 اگست کو دیے گئے اس فیصلے کے مطابق سابق صدر کو اپنے ذاتی خرچ پر اپنے سیل میں فریج، ایئرکنڈیشنر، انٹرنیٹ کنیکشن اور ایک ذاتی ملازم رکھنے کی اجازت تھی۔

یہ بھی پڑھیں

کوئی ایسا ایشو نہیں ہے جس کی وجہ سے مولانا دھرنا دے رہے ہیں

کوئی ایسا ایشو نہیں ہے جس کی وجہ سے مولانا دھرنا دے رہے ہیں

اسلام آباد: حکومت چھوڑ دیں، یہ ناممکن ہے، بیانات ابتدا میں سخت آتے ہیں لیکن …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے