زمبابوے کے سابق صدر رابرٹ موگابے 95 برس کی عمر میں چل بسے

زمبابوے کے سابق صدر رابرٹ موگابے 95 برس کی عمر میں چل بسے

ہرارے: زمبابوے کے سابق صدر رابرٹ موگابے 95 سال کی عمر میں دنیا سے رخصت ہوگئے۔

برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کے مطابق رابرٹ موگابے شدید علیل تھے اور اپریل سے سنگاپور کے اسپتال میں زیر علاج تھے۔

1924 کو پیدا ہونے والے رابرٹ موگابے زمبابوے کی آزادی کے ہیرو تصور کیے جاتے ہیں انہوں نے تقریباً تین دہائیوں تک زمبابوے پر حکومت کی اور انہیں نومبر 2017 میں ہونے والی فوجی بغاوت کے بعد اقتدار سے الگ کردیا گیا تھا۔

رابرٹ موگابے زمبابوے کی آزادی کے بعد ہونے والے پہلے الیکشن میں کامیاب ہوئے تھے اور 1980 میں زمبابوے کے وزیراعظم بنے جب کہ 1987 میں وزیراعظم آفس کو ختم کرکے انہوں نے ملک کے صدر کی حیثیت سے ذمہ داریاں سنبھالیں۔

رابرٹ موگابے کی حکومت کے ابتدائی سال سیاہ فاموں کے لیے صحت اور تعلیمی سہولیات کی فراہمی کے لیے اچھے رہے تاہم ان کے متنازع لینڈ ریفارم پروگرام سے ملک کی معیشت کو شدید دھچکا لگا جب کہ ان کی حکومت پر کرپشن کے بھی سنگین الزامات لگے۔

زمبابوے کے صدر ایمرسن منانگاگوا نے رابرٹ موگابے کی وفات پر گہرے افسوس کا اظہار کیا ہے اور انہیں زمبابوے کا بانی اور آزادی کی علامت قرار دیا۔

غیر ضروری اقدام سے اربوں ڈالرکے منصوبوں پر عملدرآمد میں الجھاؤ پیدا ہو گا

یہ بھی پڑھیں

کیون مک امریکی صدر ٹرمپ کے دور میں قومی سلامتی کے چوتھے سربراہ تھے

کیون مک امریکی صدر ٹرمپ کے دور میں قومی سلامتی کے چوتھے سربراہ تھے

واشنگٹن: امریکا کے قائم مقام قومی سلامتی کے سربراہ کیون مک الینن نے اپنی تعیناتی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے