امریکی فوج افغانستان سے نہیں جائے گی: ٹرمپ

امریکی فوج افغانستان سے نہیں جائے گی: ٹرمپ

امریکی صدرنے کہا ہے کہ طالبان کیساتھ معاہدے کے باوجود امریکی فوج افغانستان سے نہیں جائے گی۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اعلان کیا ہے کہ فوجی دستے طالبان کے ساتھ معاہدے کے باوجود افغانستان میں ہی رہیں گے۔ انہوں نے واضح کیا کہ اگر دوبارہ افغان سرزمین امریکا کے خلاف استعمال ہوئی تو وہ واپس آئیں گے۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے میڈیا کو دیے گئے ایک انٹرویو میں واضح کیا ہے کہ طالبان کے ساتھ معاہدے کے باوجود امریکی فوج افغانستان میں ہی رہے گی۔

امریکی صدر کہتے ہیں کہ طالبان سے معاہدے کے بعد تھوڑی تعداد میں فوجی دستے مستقل طور پر موجود رہیں گے۔ ٹرمپ نے افغانستان میں فوج کی تعداد میں کمی کا اعلان تو کیا ہی ہے، مگر ساتھ میں یہ بھی اعلان کیا ہے کہ اگر افغانستان کی سرزمین دوبارہ امریکا کے خلاف استعمال ہوئی تو وہ واپس آئیں گے۔

یاد رہے کہ 2001ء میں نیویارک ٹاورز پر ہونے والے حملے کے بعد امریکی فوج کی بڑی تعداد کو افغانستان بھیجا گیا تھا۔ امریکا اب اس 18 سالہ طویل جنگ کا خاتمہ چاہتا ہے اور اسے افغانستان سے نکلنے کیلئے  بہانہ کی تلاش ہے۔ اس لئے کہ امریکی فوج نے اب تک افغانستان میں اربوں ڈالر خرچ کر ڈالے ہیں۔ اعدادوشمار کے مطابق 2011ء سے 2012ء کے درمیان افغانستان کی سرزمین پر امریکا کے ایک لاکھ سے زائد ہ فوجی موجود تھے اور اس کا سالانہ خرچ 100 ارب ڈالر تک جا پہنچا تھا۔

خود کش بمباروں کے خاندانوں کی کفالت کرنے والے لبنانی بنک پرامریکی پابندیاں

یہ بھی پڑھیں

برطانیہ میں پندرہ جون سے دکانیں کھل جائیں گی

لندن: برطانوی حکومت نے ملک میں لاک ڈاؤن ختم کرنے کا اعلان کردیا وزیراعظم بورس …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے