بلوچستان میں ایڈز کے مریضوں کی تعداد میں رواں سال دوگنا اضافہ

بلوچستان میں ایڈز کا جان لیوا مرض خطرناک صورت میں سامنے آرہا ہے، سرکاری اعداد و شمار کے مطابق 2005سے 2015تک سالانہ 64کی اوسط سے 504لوگوں میں ایڈز کی تشخیص ہوئی تھی جبکہ 2016کے ابتدائی 11ماہ میں مزید 133کیسز سامنے آچکے ہیں، جو گزشتہ دس سالوں کے دوران سب سے بڑی تعداد ہے۔

صوبے میں مردوں کے علاوہ 104خواتین 20بچے جبکہ 3خواجہ سرا بھی ایڈز میں مبتلا ہیں، اس سے بھی خطرناک خدشہ ایڈز کنٹرول پروگرام کے حکام یہ ظاہر کررہے ہیں کہ سامنے آنے والوں کے علاوہ ایچ آئی وی کے شکار ساڑھے چار ہزار کے قریب لوگ معاشرے میں چھپے ہوئے ہیں ، جنہیں خود بھی علم نہیں اور وہ وائرس پھیلانے کا سبب بن رہے ہیں، ان میں اکثر تعداد نشی افراد کی ہے ۔

یہ بھی پڑھیں

بلوچستان, میں ہر سال تھیلیسیمیا, کے 2 ہزار, نئےکیسز سامنے, آرہے ہیں

بلوچستان میں ہر سال تھیلیسیمیا کے 2 ہزار نئےکیسز سامنے آرہے ہیں

کوئٹہ: صوبے میں تھیلیسیمیا کے بڑھتے کیسز کے باعث ایک خاندان کے چار افراد بھی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے