سپریم کورٹ میں آرٹیکل 370ختم کرنےپرمقبوضہ کشمیرسے14درخواستیں دائر ہوئیں

سپریم کورٹ میں آرٹیکل 370ختم کرنےپرمقبوضہ کشمیرسے14درخواستیں دائر ہوئیں

نئی دہلی: بھارتی سپریم کورٹ میں مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم کرنے کا مودی سرکار کے فیصلے کیخلاف چودہ در خواستوں پر سماعت ہوئی ، تین رکنی بینچ نے سماعت کی

تمام درخواستوں پر بھارتی سپریم کورٹ نےحکومت کونوٹس جاری کرتے ہوئے سات دن میں تفصیلی جواب طلب کرلیا جبکہ ایگزیکٹو ایڈیٹر کشمیر ٹائمز کی انٹرنیٹ اورمواصلاتی نظام پر پابندی ختم کرنے کی درخواست پر بھی بھارتی حکومت کو نوٹس جاری کیا۔
سپریم کورٹ میں آرٹیکل 370ختم کرنےپرمقبوضہ کشمیرسے14درخواستیں دائر ہوئیں ، گذشتہ روز مقبوضہ کشمیر کے سابق بیوروکریٹ شاہ فیصل اور سماجی کارکن شہلا راشد نے مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم کرنے کا مودی سرکار کا فیصلہ بھارتی سپریم کورٹ میں چیلنج کیا تھا۔
بھارتی ایڈووکیٹ ایم ایل شرما، مقبوضہ کشمیر کی نیشنل کانفرنس کے رہنما محمد اکبر لون اور جسٹس ریٹائرڈ حسنین مسعودی سمیت دیگر نے آرٹیکل 370 کی منسوخی کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا تھا۔
سماعت میں بھارتی چیف جسٹس رنجن گوگی نے مقبوضہ کشمیرکی حیثیت ختم کرنےکی درخواست پر اعتراضات کرتے ہوئے کہا تھا اس پٹیشن میں کچھ نہیں، کیوں نہ درخواست کو ٹیکنیکل بنیادوں پر مسترد کردوں۔

یہ بھی پڑھیں

برطانیہ میں پندرہ جون سے دکانیں کھل جائیں گی

لندن: برطانوی حکومت نے ملک میں لاک ڈاؤن ختم کرنے کا اعلان کردیا وزیراعظم بورس …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے