2017 میں ہونے والی مردم شماری کے مطابق ملک کی آبادی 20 کروڑ 70 لاکھ سے زائد تھی

2017 میں ہونے والی مردم شماری کے مطابق ملک کی آبادی 20 کروڑ 70 لاکھ سے زائد تھی

کراچی: مردم شماری کے ہندو، عیسائی، سکھ، پارسی اور دیگر مذہبی اقلیتوں سے متعلق نتائج مارچ 2018 میں جاری کیے جانے تھے مگر یہ ابھی تک عام نہیں کیے جاسکے

پاکستان تحریک انصاف کے اقلیتی رکن قومی اسمبلی رمیشن کمار وانکوانی جو پاکستان ہندو کونسل کے پیٹرن انچیف بھی ہیں، کا کہنا ہے کہ حکومت کو مذہبی اقلیتوں کی آدم شماری سے متعلق اعدادوشمار گذشتہ برس جاری کرنے تھے مگر اب تک نہیں ہوسکے۔ انھوں نے امید ظاہر کی کہ اس ضمن میں کام ہورہا ہے اور جلد ہی اعدادوشمار جاری کردیے جائیں گے۔
رمیش کمار جو قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے شماریات کے چیئرمین بھی رہ چکے ہیں، کا دعویٰ ہے کہ پاکستان میں 80 لاکھ ہندو بستے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ نادرا کی معلومات کے مطابق ملک میں ہندووں کی کل تعداد 80 لاکھ کے لگ بھگ ہے۔
رمیش کمار کے مطابق مردم شماری کے غیرسرکاری نتائج کے مطابق ملک میں عیسائیوں کی تعداد 50 لاکھ کے قریب ہے جب کہ پاکستان میں 16ہزار سکھ بھی بستے ہیں۔پاکستان میں رجسٹرڈ ووٹرز کے تناظر میں بات چیت کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ کل رجسٹرڈ ووٹروں میں ہندو کمیونٹی کا تناسب 3.5 فیصد، اور عیسائی کمیونٹی کا تناسب 3 فیصد ہے۔

یہ بھی پڑھیں

طیارہ حادثہ ، لواحقین بغیر شناخت کے لاشیں لے گئے:ایدھی فاؤنڈیشن

کراچی: طیارہ حادثہ ،35لاشیں قابل شناخت اور30 ناقابل شناخت ہیں 94 لاشیں مکمل 3 باقیات …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے