کراچی میں مردم شماری غلط ہوئی اسی وجہ سے شہر میں مسائل زیادہ ہیں

کراچی میں مردم شماری غلط ہوئی اسی وجہ سے شہر میں مسائل زیادہ ہیں

کراچی: صفائی کے 20 دن میں 48 ہزار ٹن کچرا نالوں سے صاف کیا گیا اسی وجہ سے 150 ملی میٹر بارش کے باوجود شہر کی سڑکوں پر پانی جمع نہیں ہوا

ایف ڈبلیو او کے دفتر کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے علی زیدی نے کہا کہ کراچی کے بڑے نالوں سے 20 دن میں 48 ہزار ٹن سے زائد کچرا نکالا ہے جسے اب لینڈ فل سائٹ پر منتقل کیا جارہا ہے، یہ کام صرف ایف ڈبلیو او ہی کرسکتا ہے، میں ہاتھ جوڑ کر وزیر اعلی سے درخواست کرتا ہوں کہ کراچی کو صاف کیا جائے کیوں کہ شہر کی حالت بہت خراب ہوگئی ہے یہ ہمارا کام نہیں ہے، مئیر کراچی کی درخواست پر ہم نے شہر میں صفائی کام شروع کیا ہے،ہمیں صفائی کے لیے ساڑھے 8 کروڑ روپے ملے ہیں جس میں سے ساڑھے چار کروڑ روپے خرچ کردئیے۔
سندھ حکومت کے الیکٹرک کے خلاف کارروائی کرے، کے الیکڑک کی جانب سے ملنے والے 2 کروڑ روپے اس میں رکاوٹ نہیں بنیں گے ہمیں ہر صورت شہر صاف کرنا ہے، صفائی مہم کراچی کے لوگوں کی کمپین ہے، 46 ہزار ٹن نالوں سے کچرا نکالا ہے کراچی میں جی ٹی ایس نہیں ہے اس لیے کچرا سڑک پر پھینک دیا جاتا ہے شہر میں جی ٹی ایس بنایا جائے۔
علی زیدی نے کہا کہ ناصر شاہ کو بھی غلط معلومات فراہم کی جاتی ہیں شہر میں 11 جی ٹی ایس ہیں لیکن 5 آپریشنل ہیں، پارکس اور سڑکوں کو جی ٹی ایس بنادیا گیا، شہر میں اسپرے کرنا لازمی ہے، شہر میں مچھروں اور مکھیوں نے حملہ کردیا ہےکیا یہ کام بھی ہمیں کرنا ہے؟ آپ لکھ کر دے دیں تو یہ کام بھی ہم کردیں گے۔

یہ بھی پڑھیں

سندھ اسمبلی کی ایک اور رکن میں کورونا کی تصدیق

سندھ اسمبلی کی ایک اور رکن میں کورونا کی تصدیق

کراچی: نماز جمعہ کے وقفے کے بعد سندھ اسمبلی کا اجلاس اسپیکر آغاسراج درانی کی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے