افغانستان میں کچھ بھی ہو امریکا اسے امن کا نام دیناچاہتاہے

افغانستان میں کچھ بھی ہو امریکا اسے امن کا نام دیناچاہتاہے

اسلام آباد: پاکستان پیپلز پارٹی کی رہنما نے کہا پارلیمان میں کہاگیا دوسروں کی جنگ میں ملوث ہونانہیں چاہتے، اوآئی سی ممالک کے لیے اپنے مفادات زیادہ اہم ہیں

شیری رحمان نے گفتگو کرتے ہوئے کہا افغانستان میں کچھ بھی ہو امریکا اسے امن کا نام دیناچاہتاہے اور خود کو افغانستان میں فاتح ظاہر کرانا چاہتاہے۔
شیری رحمان کا کہنا تھا کہ دنیامیں سب سے زیادہ مظالم مقبوضہ کشمیر میں ہورہےہیں ، مقبوضہ کشمیر میں کرفیوکو15 دن ہوگئے ہیں اور 9لاکھ فوج کھڑی ہے یہ بہت تشویشناک ہے، مظالم کے باوجود دنیا کو کیاچیز بھارت کے خلاف آواز اٹھانے سے روک رہی ہے۔
پارلیمان میں کہاگیا دوسروں کی جنگ میں ملوث ہونانہیں چاہتے، اوآئی سی ممالک کے لیے اپنے مفادات زیادہ اہم ہیں۔
کشمیر کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ پاکستان نےکبھی بھی مقبوضہ کشمیر پر ثالثی سےانکارنہیں کیا، ٹرمپ کی ثالثی کی پیشکش کوبھی پاکستان نےقبول کیاہے، ٹرمپ کی پیشکش کودیکھناچاہیےکہیں بھارت کاکوئی معاہدہ تونہیں۔
پاکستان شروع سےمسئلہ کشمیرکےحل کی کوشش کررہاہے، بھارت مسئلےکےحل کےلیےبات کرےتاکہ صورتحال بہترہو، بھارت میں لوگ موجودہ صورتحال پرتشویش کااظہارکررہےہیں، بھارت بات چیت کےبجائےدھمکیاں دےرہاہے۔

یہ بھی پڑھیں

2 مغربی مغویوں کا 3 طالبان قیدیوں کے ساتھ تبادلہ موخر

2 مغربی مغویوں کا 3 طالبان قیدیوں کے ساتھ تبادلہ موخر

پشاور: افغان صدر اشرف غنی نے منگل کے روز اعلان کیا تھا کہ وہ طالبان …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے