خلیجی ریاستوں میں ایم ایس اور ایم ڈی کئے ہوئے ملازمتوں پر تعینات پاکستانی ڈاکٹروں کی نوکریاں بچائیں
medical doctor comforting senior patient

خلیجی ریاستوں میں ایم ایس اور ایم ڈی کئے ہوئے ملازمتوں پر تعینات پاکستانی ڈاکٹروں کی نوکریاں بچائیں

کراچی: گزشتہ دو ماہ سے پاکستانی یونیورسٹوں سے فارغ التحصیل ایم ایس اور ایم ڈی کی ڈگری کے حامل ڈاکٹروں کو سعودی کمیشن فار ہیلتھ اسپیشلسٹ اور دبئی ہیلتھ اتھارٹی نے نوکریوں سے نکالنے کے احکامات دے دیے اور ان کی ڈگریوں کو ماننے سے انکار کردیا

صدر پی او اے پروفیسر محمد عارف کا کہنا تھا کہ اس وقت 3 ہزار سے زائد ڈاکٹروں کو نوکریاں چھوڑنے کا کہا گیا ہے جو گزشتہ 8، 10 سالوں سے خلیجی ممالک میں اپنی خدمات فراہم کررہے ہیں۔
اس فیصلے سے ان لوگوں کی نوکریاں، ڈگریاں ختم ہوجائیں گی وہیں دنیا میں پاکستان کا نام بھی خراب ہوگا۔
ڈاکٹر نعیم الحق کا کہنا تھا کہ نوکری دینے سے قبل خلیجی اداروں کے متعلقہ ادارے پاکستان کے ڈاکٹروں کی ڈگریوں کی مکمل جانچ پڑتال کراتے ہیں پھر ایسا کیا ہوا کہ فوری طور پر اور کس کے کہنے پر یہ سب کچھ کیا جا رہا ہے۔
پی او اے کے حکام کا کہنا تھا کہ پاکستان کے پوسٹ گریجوایشن کے لیے دو حصے ہیں ایک کالج آف فیزیش اینڈ سرجن اور دوسرا جامعات ہیں۔ حکومت نے دو سسٹم بنائے ہیں جامعات حکومت کی مرضی سے یہ ڈگریاں دے رہی ہے۔
حکام نے مزید کہا کہ وفاقی حکومت فوری طور پر اس معاملے کی سنگینی کو دیکھتے ہوئے اقدامات کرے اور خلیجی ممالک میں موجود حکام سے رابطہ کرے تاکہ ڈاکٹروں کے مستقبل کو محفوظ بنایا جائے۔

یہ بھی پڑھیں

ساحلی علاقے صوبائی حکومت کے زیر انتظام لانے کا فیصلہ

ساحلی علاقے صوبائی حکومت کے زیر انتظام لانے کا فیصلہ

کراچی: قانونی مسودے کی سندھ اسمبلی سے منظوری کے بعد کراچی کے تمام ساحل سندھ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے