گرین لینڈ کے جزیرے کے باشندوں کا ٹرمپ کے فیصلے پر شدید ردعمل

گرین لینڈ کے جزیرے کے باشندوں کا ٹرمپ کے فیصلے پر شدید ردعمل

ڈنمارک کے زیر تسلط خود مختار علاقے گرین لینڈ کو خریدنے کے بارے میں امریکی صدر کے فیصلے پر اس جزیرے کے باشندوں نے شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے اسے احمقانہ اقدام قرار دیا ہے۔

جزیرہ گرین لینڈ کے باشندوں نے اس جزیرے کو خریدنے کے امریکی صدر ٹرمپ کے فیصلے کے بارے میں شائع ہونے والی خبروں کے بعد اس معاملے پراپنی شدید مخالفت کا اعلان کیا ہے-

گرین لینڈ کے مشرقی ساحل کے علاقے تسیلاق کے ایک شہری نے کہا ہے کہ ٹرمپ کا فیصلہ انتہائی متکبرانہ اور احمقانہ ہے- ڈنمارک کے زیر تسلط اس خود مختار علاقے کی انتظامیہ نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ جزیرہ گرین لینڈ قابل فروخت نہیں ہے۔

جزیرہ گرین لینڈ کی وزیراعظم میتی فریڈریکسن نے بھی اس بارے میں کہا کہ ہم ہمیشہ تجارت کے لئے تیار ہیں لیکن اپنی سرزمین کو نہیں بیچیں گے-

امریکی صدر ٹرمپ نے اگلے مہینے اپنے دورہ ڈنمارک سے قبل ڈنمارک کے زیرتسلط جزیرہ گرین لینڈ کو خریدنے کے بارے میں اپنے مشیروں سے صلاح و مشورہ کیا ہے-

جزیرہ گرین لینڈ ڈنمارک کے زیر تسلط ایک خود مختار جزیرہ ہے جو بحراٹلانٹیک اور بحر آرکٹیک کے درمیان واقع ہے-

یہ جزیرہ دفاعی خارجہ اور اقتصادی پالیسی میں ڈنمارک سے وابستہ ہے-

بھارتی اپوزیشن نےمسئلہ کشمیرپرسلامتی کونسل کےاجلاس کومودی کی سفارتی ناکامی قراردیدیا

یہ بھی پڑھیں

'اگر ہم خطے میں حقیقی سلامتی چاہتے ہیں تو پھر اس کا حل امریکی جارحیت کو روکنا ہے

‘اگر ہم خطے میں حقیقی سلامتی چاہتے ہیں تو پھر اس کا حل امریکی جارحیت کو روکنا ہے

ایران : صدر حسن روحانی نے واشنگٹن کے الزامات کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے