وزیراعظم نے تمام آپشنز استعمال کرنے کا کہہ دیا ہے، ترجمان دفترخارجہ

وزیراعظم نے تمام آپشنز استعمال کرنے کا کہہ دیا ہے، ترجمان دفترخارجہ

اسلام آباد : ترجمان دفتر خارجہ نے ہفتہ وار بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ پاکستانی نے قومی سلامتی کمیٹی کے فیصلو سے بھارت کو آگاہ کردیا، پاکستان کشمیریوں کی اخلاقی، سفارتی اور سیاسی حمایت جاری رکھے گا۔

تفصیلات کے مطابق بھارت کی جانب سے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے اور مظلوم کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے سفاکانہ مظالم پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ بھارت نے مقبوضہ کشمیرکو دنیا کی سب سے بڑی جیل میں تبدیل کردیا، بھارت کے یکطرفہ اقدامات کو مسترد کرتا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں انٹرنیٹ اور موبائل فون سروس معطل ہے، مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کے قراردادوں میں موجود اور اقوام متحدہ کا تسلیم شدہ مسئلہ ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ سفارتی تعلقات محمد کرنے کے فیصلے سے بھارت کو آگاہ کردیاہے، اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی بربریت کو ختم کرایا جائے۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ریاستی دہشت گردی کا راج ہے ،مقبوضہ وادی میں کئی روز سے کرفیونافذ ہے،کرفیو کےباعث مقبوضہ وادی میں کھانے پینے کی اشیاکی کمی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ وادی میں انٹرنیٹ اور فون سروس بند ہے،کشمیری عوام علاج معالجے کی سہولت سے بھی محروم ہیں،پاکستان کرتارپورراہداری سےمتعلق اقدامات جاری رکھےگا، پاکستان کرتارپورراہداری پراپناکام جاری رکھےگا۔

ترجمان دفتر خارجہ محمد فیصل نے ہفتہ وار بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ امریکی وفدسےمقبوضہ کشمیرکی صورتحال پرتفصیلی تبادلہ خیال کیا،مقبوضہ کشمیرکامسئلہ طویل ہےجوحل طلب ہے۔

ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا تھا کہ 27فروری کویادرکھیں،مسلمان کسی سےنہیں ڈرتے،بھارت جوکرناچاہتاہےکرلےاس کاجواب کل پارلیمنٹ نےدیدیاہے، بھارت کوجواب نیشنل سیکیورٹی کمیٹی کےفیصلوں سےمل چکاہے۔

ڈاکٹر محمد فیصل نے واضح کیا کہ خوف کالفظ ہماری لغت میں نہیں ہے،جوہونےجارہاہےعالمی برادری اس کانوٹس لےرہی ہے، مقبوضہ کشمیرمیں بڑاانسانی بحران پیداہونےجارہاہے۔

ترجمان نے بتایا کہ پاکستان کامؤقف واضح ہے کشمیریوں کی بات سنی جائے،مستقبل میں سفارتی تعلقات مکمل ختم ہونےکےامکانات ہیں،وزیراعظم نےبھارت کوکہاتھاتمام معاملات پرمذاکرات کیلئےتیارہیں۔

انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیرسلامتی کونسل کی قراردادوں کےمطابق حل کیاجائے،مقبوضہ کشمیربھارت کااندرونی مسئلہ نہیں ایک تنازع ہے، نیشنل سیکیورٹی کمیٹی نےجوفیصلےکیےاس پرمکمل عملدرآمدہوگا،ایک کروڑسےزائدافرادکومقبوضہ وادی میں قیدکردیاگیاہے۔

انہوں نے کہا کہ مذاکرات سےتوہم نےکبھی انکارنہیں کیاجوبھی ہوہم کشمیریوں کےساتھ کھڑےہیں، بھارت کےتمام اقدامات سلامتی کونسل کی قراردادکیخلاف ہیں،پاکستان نےبھارت کےساتھ تجارتی روابط منقطع کردیئےہیں۔

ڈاکٹر فیصل نے بتایا کہ بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ پاکستان بھارت کےاقدام کوعالمی عدالت میں لےجانےکااظہارکرچکاہے،آرٹیکل370ختم کرنےکوبھارت میں سپریم کورٹ میں چیلنج کردیاگیاہے۔آرٹیکل370ختم کرنےکیخلاف پاکستان عالمی عدالت میں جائےگا،آرٹیکل370ختم کرنےکیخلاف پاکستان اقوام متحدہ میں معاملہ اٹھائے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارتی غیرقانونی اقدام کوسیکیورٹی کونسل میں بھی اٹھایاجائےگا،دنیاسےتوقع کررہےہےبھارت کوغیرقانونی اقدام اٹھانےسےروکے۔

ڈاکٹر فیصل نے بتایا کہ امریکی سینیٹرلنڈسےگراہم نےمقبوضہ کشمیرکی صورتحال پرتشویش کااظہارکیا،مودی کےاقدامات پربھارت میں ہی سوالات اٹھ رہےہیں،بھارتی اقدامات سےعلاقائی امن واستحکام کوخطرات ہیں۔

نیب نے مریم نواز کو گرفتار کرلیا

یہ بھی پڑھیں

پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس 30 اگست کو طلب

پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس 30 اگست کو طلب

اسلام آباد: صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں کا مشترکہ اجلاس …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے