کرتاپور راہداری منصوبہ کارواں سال اکتوبر میں سنگ بنیادرکھاجاناتھا

کرتاپور راہداری منصوبہ کارواں سال اکتوبر میں سنگ بنیادرکھاجاناتھا

اسلام آباد: بھارتی ہائی کمیشن کی سفارتی سرگرمیوں کو بھی محدود کرنے سمیت دوونوں ممالک کے درمیان جواعلی سطح کے سفارتی رابطے ہیں ان کو بھی کم ترین سطح پرکردیا جائیگا

ڈپٹی ہائی کمشنر انتظامی امورکی نگران ہوں گے جبکہ ان کی نقل وحرکت بھی محدود ہو گی۔ واہگہ بارڈرکو مکمل طور پر بند نہیں کیا جائیگا۔ واہگہ بارڈر پر پیدل کراس کرنیوالے دونوں ممالک کے شہریوں کو اجازت ہوگی۔
پاکستان اور بھارت کے درمیان دوستی بس بدستور چلتی رہے گی جبکہ کرتار پورراہداری منصوبہ کھٹائی میں پڑگیا،کرتاپور راہداری منصوبہ کارواں سال اکتوبر میں سنگ بنیادرکھاجاناتھا، کرتارپور راہداری کا پہلا مرحلہ ستمبر میں مکمل ہواتھا، منصوبے کی تعمیر پر محتاط اندازے کے مطابق 15 ارب روپے لاگت کا تخمینہ ہے، راہداری کیلیے خطیر رقم سے 15 سو ایکڑ اراضی خریدی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

31 مئی کو لاک ڈاؤن میں نرمی یا سختی کا فیصلہ کیا جائے گا

اسلام آباد : وزیراعظم عمران خان نے قومی رابطہ کمیٹی کا اجلاس 31 مئی کو …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے