مقبوضہ کشمیر کی حیثیت ختم کرنے پر لندن میں بھارت کے خلاف مظاہرہ

مقبوضہ کشمیر کی حیثیت ختم کرنے پر لندن میں بھارت کے خلاف مظاہرہ

لندن: مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے پر لندن میں بھارت کے خلاف زبردست مظاہرہ کیا گیا، جس میں مظاہرین نے بھارت کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔

تفصیلات کے مطابق بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی جداگانہ حیثیت کے باقاعدہ خاتمے پر دنیا بھر میں مقیم کشمیری سراپا احتجاج بن گئے ہیں۔

اس سلسلے میں لندن میں بھارتی ہائی کمیشن کے سامنے بڑا مظاہرہ کیا گیا، جس میں طلبہ نے بھی شرکت کی اور ہندو پنڈت بھی بھارتی فیصلے کے خلاف احتجاج کرتے دکھائی دیے۔

مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے اور مزید فوج کی تعیناتی پر لندن میں ٹریڈ یونینز کے نمایندے بھی کشمیریوں کی حمایت میں نکل آئے۔

لندن میں سراپا احتجاج مظاہرین کا کہنا تھا کہ بھارت کشمیر میں اسرائیل کی طرز پر آپریشن کرنے جا رہا ہے۔

دریں اثنا، بھارتی اقدام پر برطانیہ میں پاکستانی کمیونٹی بھی ناراض دکھائی دے رہی ہے، مسیحی مبلغ جیمز شیرا نے برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن کو خط لکھ کر تحفظات کا اظہار کر دیا ہے۔

جیمز شیرا نے خط میں لکھا کہ بھارت آرٹیکل 370 ختم کر کے کشمیر میں آبادی کا تناسب بگاڑنا چاہتا ہے، کشمیر کے خصوصی تشخص کو ختم کرنے سے خطے میں بگاڑ پیدا ہوگا۔

عیسائی رہنما کا کہنا تھا کہ بھارت کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں بند کرے، برطانوی حکومت کشمیر کے معاملے میں بھارت پر دباؤ ڈالے۔

واضح رہے کہ بھارت نے آئین کے آرٹیکل 370 کا خاتمہ کر کے مقبوضہ کشمیر کی جداگانہ حیثیت کا خاتمہ کر دیا ہے جس پر دنیا بھر کے کشمیری سراپا احتجاج ہیں۔

برسلز میں یورپی کشمیر کونسل کے چیئرمین علی رضا نے اپنے بیان میں کہا کہ اب جموں و کشمیر کی حیثیت 1947 جیسی ہو گئی ہے، جموں و کشمیر کی جداگانہ حیثیت ختم کر کے کشمیر کا بھارت سے مشروط الحاق ختم کر دیا گیا ہے، اس لیے اقوام متحدہ اپنی امن فوجیں مقبوضہ وادی روانہ کرے۔

آیت اللہ شیخ زکزکی کو علاج کے لئے بیرون ملک جانے کی اجازت

یہ بھی پڑھیں

فرانس میں پنشن قوانین کے خلاف ملک بھر میں شٹر ڈاؤن رہا

فرانس میں پنشن قوانین کے خلاف ملک بھر میں شٹر ڈاؤن رہا

پیرس: فرانس میں پنشن قوانین کے خلاف ملک بھر میں شٹر ڈاؤن رہا، پندرہ لاکھ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے