اسپین میں بے گھر لوگوں کا حکومت کے خلاف احتجاج

اسپین میں بے گھر لوگوں کا حکومت کے خلاف احتجاج

اسپین کے دارالحکومت میڈرڈ میں بے گھر لوگوں نے وزارت صحت و رفاہ کی عمارت کے باہر کیمپ لگا کر حکومت کی جانب سے ان کی معاشی حالت پر توجہ نہ دئے جانے پر احتجاج کیا ہے۔

میڈرڈ میں بے گھر لوگوں نے اپنے کیمپوں پر ایسے بینرز نصب کررکھے تھے جن پر نعرے درج تھے کہ ہر شخص کو مکان اور چھت ملنی چاہئے۔ میڈرڈ کے میئر خوزہ لوئیس المیڈا نے جن کا تعلق قدامت پسند پیپلز پارٹی سے ہے بے گھر افراد کے اس احتجاج پر تنقید کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح سے پبلک مقامات کو غیر قانونی طریقے سے نہیں گھیرا جاسکتا اور نہ ہی اس طرح حکومت پر دباؤ ڈالنا چاہئے۔ میڈریڈ کے ڈپٹی میئر بوگونا والیسیاس نے بھی دعوی کیا ہے کہ جن لوگوں نے اجتماع کیا ہے ان میں صرف بارہ افراد ایسے ہیں جن کے پاس سرچھپانے کے لئے گھر نہیں ہے جبکہ باقی لوگ سماجی کارکن ہیں جو اپنی بات حکومت تک پہنچانا چاہتے ہیں۔ اسپین کی وزارت صحت و رفاہ کے مطابق اسپین میں تینتیس ہزار لوگ ایسے ہیں جن کے پاس رہنے کے لئے گھر نہیں ہے۔ دوہزار آٹھ سے دوہزار تیرہ تک یورپ میں آنے والے اقتصادی بحران سے اسپین ابھی تک باہر نہیں نکل سکا ہے۔

روسی دارالحکومت ماسکو میں احتجاج، اپوزیشن لیڈر کو حراست میں لے لیا گیا

یہ بھی پڑھیں

برطانیہ میں پندرہ جون سے دکانیں کھل جائیں گی

لندن: برطانوی حکومت نے ملک میں لاک ڈاؤن ختم کرنے کا اعلان کردیا وزیراعظم بورس …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے