امریکا اور پاکستان کے مابین دو طرفہ تعلقات کو مضبوط کرنے کے راستوں پر غور

امریکا اور پاکستان کے مابین دو طرفہ تعلقات کو مضبوط کرنے کے راستوں پر غور

اسلام آباد: اجلاس وزیراعظم کے دفتر میں منعقد ہوا اعلیٰ سطحی اجلاس وزیراعظم کے دفتر میں منعقد ہوا جس میں وزیراعظم کے دورہ امریکا کے نتائج پر نظرِ ثانی اور نیویارک میں ہونے والے اقوامِ متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس کے بارے میں بات چیت کی گئی

اجلاس میں چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر بحری امور سید علی زیدی، معاونِ خصوصی برائے سمندر پار پاکستانی سید ذوالفقار عباس بخاری، انٹرسروسز انٹیلی جنس کے ڈائریکٹر جنرل لیفٹیننٹ جنرل فیض حمید اور اعلیٰ سطحی سفارتکار علی جہانگیر صدیقی شریک ہوئے۔
اجلاس میں دورہ امریکا کے دوران کیے گئے فیصلوں کو امریکی حکام کے ساتھ قریبی تعلقات رکھتے ہوئے عملی جامہ پہنانے اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے مجوزہ دورہ پاکستان کے بارے میں گفتگو کی گئی۔
اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے اپنے کامیاب دورے پر اطمینان کا اظہار کرنے کے ساتھ خطے میں امن اور پاک امریکا تعلقات کے حوالے سے صدر ٹرمپ خیالات کو سراہا۔
وزیر اعظم نے کہا کہ انہیں یقین ہے کہ دو طرفہ تعلقات نہ صرف امریکا اور پاکستانی قیادت کی خواہش ہے بلکہ اس سے خطے میں امن و استکام بھی آئے گا۔
وزیراعظم نے دورہ امریکا کو کامیاب قرار دیا اور کہا کہ انہوں نے پاکستان کا مقدمہ موثر انداز میں پیش کیا۔پاکستان نے ہمیشہ مذاکرات اور بات چیت کے ذریعے پر امن تصفیے کی پیشکش کی ہے اور ملک کے اس کردار کا سراہا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

ایس او پیز پر عمل اور احتیاط کریں ، آپ محفوظ رہیں گے

اسلام آباد: وزیراعظم نے کہا ہے کہ کورونا جانے والا نہیں، ویکسین کی تیاری تک …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے