مسافروں کے سامان کی پلاسٹک ریپنگ کو لازمی قرار دیے گئے حکم نامے کو واپس

مسافروں کے سامان کی پلاسٹک ریپنگ کو لازمی قرار دیے گئے حکم نامے کو واپس

اسلام آباد: وفاقی وزیر انسانی حقوق شیریں مزاری نے سوشل میڈیا کی ویب سائٹ ٹویٹر میں اپنے بیان میں سول ایوی ایشن کے نئے حکم نامے کو جاری کرتے ہوئے اس فیصلے سے آگاہ کیا اور وضاحت کی کہ یہ فیصلہ وفاقی حکومت کا نہیں تھا

شیریں مزاری کا کہنا تھا کہ ‘غلط نوٹی فکیشن کو واپس لیا گیا ہے، جیسا کہ آج صبح میں نے کہا تھا کہ یہ وفاقی حکومت کافیصلہ نہیں تھا’۔
ان کا کہنا تھا کہ ‘اس حوالے سے ایک انکوائری ہوگی کہ سی اے اے میں کیسے اور کس نے اس طرح کا نوٹی فکیشن جاری کی’۔
وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ ‘پوری بیوروکریسی کو علم ہونا چاہیے کہ وفاقی حکومت کا مطلب کابینہ ہے، جہاں یہ معاملہ کبھی زیر بحث نہیں آیا’۔
‘ذاتی طور پر میں سمجھتی ہوں کہ یہ ایک مضحکہ خیز فیصلہ ہے اور مالی طور پر سمندر پار پاکستانیوں کو پاکستان کے دورے پر غیر ضروری مالی بوجھ ہے’۔
وفاقی وزیر نے کہا کہ ‘میرا ماننا ہے کہ یہ صرف ان لوگوں کے لیے ضروری ہے جو روڈ ٹو مکہ پروگرام کے تحت حج کے لیے جارہے ہیں لیکن دیگر تمام مسافروں پر اس کا اطلاق نہیں ہونا چاہیے’۔

یہ بھی پڑھیں

قائم علی شاہ کی ضمانت قبل از گرفتاری منظور

قائم علی شاہ کی ضمانت قبل از گرفتاری منظور

اسلام آباد: پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) رہنما کی ضمانت 29 اگست تک کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے