پاک بحریہ کا دفاع مزید مضبوط اور موثر ہو گیا

پاکستان کا بحری دفاع مزید موثر ہو گیا ہے۔

جرمن رائنلینڈ ائر سروس نے پاک فضائیہ کے طیارے کو جدید ٹیکنالوجی سے لیس کر دیا ہے۔

جرمنی سے دوسرا اے ٹی آر طیارہ تکنیکی جدت کے بعد پاک بحریہ کے سپرد کیے جانے کے بعد پاک نیوی کی دفاعی صلاحیت میں گراں قدر اضافہ ہوگیا ہے۔

ذرائع کے مطابق طیارے نے جرمنی سے پاکستان آتے ہوئے پیرس ایئر شو میں بھی شرکت کی۔ جہاز کثیر الجہتی ریڈار اور انفراریڈ سینسرز سے لیس کیا گیا ہے۔ مذکورہ طیارہ فضائی، بحری اوربری نگرانی کے ساتھ ساتھ آبدوز شکن آپریشنز میں بھی استعمال کیا جا سکتا ہے۔

نیز پاک فضائیہ کا یہ جدید جہاز بحری نگرانی کیساتھ امدادی آپریشنز بھی سرانجام دے سکتا ہے۔

سی ایگل طیارہ آبدوز کی تلاش، نشاندہی اور اپنے ٹارگٹس کو تباہ کرنے کیلئے مہلک میزائلوں سے لیس ہے۔ اس کے علاوہ یہ طیارہ جدید مواصلاتی نظام، الیکٹرانک معاونت اور اپنے تحفظ کی اہلیت بھی رکھتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

لیبارٹریوں کے معیار کو جانچنے کیلیے 11 رکنی ٹاسک فورس تشکیل

لیبارٹریوں کے معیار کو جانچنے کیلیے 11 رکنی ٹاسک فورس تشکیل

کراچی: سندھ ہیلتھ کیئر کمیشن نے سندھ بھر میں قائم لیبارٹریوں کے معیار کو جانچنے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے