چینلز کو آف ائیر کرنا انصاف کے اصولوں کی خلاف ورزی اور آزادی اظہارِ رائے کو دھمکانے کے مترادف ہے

چینلز کو آف ائیر کرنا انصاف کے اصولوں کی خلاف ورزی اور آزادی اظہارِ رائے کو دھمکانے کے مترادف ہے

اسلام آباد: مذکورہ شکایت ’بغیر کوئی وجہ بتائے اور ان کا موقف جانے، کیبل نیٹ ورک کے ذریعے ان چینلز کو آف ایئر کرنے‘ پر درج کروائی گئی

پی بی اے کی جانب سے جاری کردہ بیان میں 3 ٹیلی ویژن چینلز کو ’آف ایئر کرنے کی مذمت‘ کی گئی تاہم اس معاملے پر پیمرا کا موقف حاصل نہیں ہوسکا۔
پاکستان براڈ کاسٹرز ایسوسی ایشن نے پیمرا سے مطالبہ کیا کہ ’ان چینلز کو فوری طور پر بحال کیا جائے اور اگر ان چینلز کے خلاف ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی کوئی شکایت موجود ہے تو پہلے سے موجود طریقہ کار پر عمل کیا جائے‘۔
بیان میں مزید کہا گیا کہ ’ان چینلز کو موقف دینے کا حق نہ دے کر اور یک طرفہ طور پر انہیں آف ائیر کرنا انصاف کے اصولوں کی خلاف ورزی اور آزادی اظہارِ رائے کو دھمکانے کے مترادف ہے‘۔
یہ اقدام پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کی لاہور میں کی گئی متنازع پریس کانفرنس ’بغیر کسی تدوین کے براہِ راست دکھانے‘ پر میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی کی جانب سے 21 ٹیلی ویژن چینلز کو نوٹس بھیجنے کے ایک روز بعد سامنے آیا۔

یہ بھی پڑھیں

نواز شریف کا لندن کے برج اسپتال میں ڈیڑھ گھنٹے معائنہ کیا گیا

نواز شریف کا لندن کے برج اسپتال میں ڈیڑھ گھنٹے معائنہ کیا گیا

لندن: ٹیسٹس اور نواز شریف کے مرض کی نوعیت، تشخیص اور علاج کے حوالے سے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے