ٹیکسٹائل پراسیسنگ ملز ایسوسی ایشن اور حکومت کے مابین مذاکرات میں ڈیڈ لاک آگیا

ٹیکسٹائل پراسیسنگ ملز ایسوسی ایشن اور حکومت کے مابین مذاکرات میں ڈیڈ لاک آگیا

اسلام آباد: آل پاکستان ٹیکسٹائل پراسیسنگ ملز ایسوسی ایشن کے جاری کردہ اعلامیے کے مطابق فیصل آباد ٹیکسٹائل پراسیسنگ انڈسٹری اور حکومت کے مابین 4گھنٹے اجلاس نتیجہ خیز نہ ہوسکا

حکومت نے آئندہ اجلاس اسلام آباد میں طلب کیا ہے تاہم ٹیکسٹائل پراسیسنگ انڈسٹری کے مطالبات پر عمل درآمد نہیں کیا جارہا جس کی وجہ سے ٹیکسٹائل پراسیسنگ انڈسٹری بدستور ملک گیر سطح پر بند رہے گی۔
ایسوسی ایشن کے جاری کردہ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ 8جولائی کو ہونے والے اجلاس میں تقریباً تمام مل مالکان نے شرکت کی اور اپنی رائے کا اظہار کیا۔ بحث و مباحثے کے بعد فیصلہ کیا گیا ٹیکسٹائل پراسیسنگ انڈسٹری بدستور پورے پاکستان میں بند رہے گی اعلامیہ میں مزید کہا گیا ہے کہ کیونکہ پارٹیوں نے یکم جولائی سے نئے ریٹ پر اپنے پروگرام روک دیے ہیں اور اپنے پروگرام ڈائنگ یا پرنٹ کرانے سے منع کردیا ہے اس وجہ سے ٹیکسٹائل پراسیسنگ انڈسٹریز بدستور بند رہیں گی۔
جی ایس ٹی کے خلاف ہڑتال اور احتجاج پر ماربل انڈسٹری دو دھڑوں میں بٹ گئی ہے۔ پاکستان ماربل ایسوسی ایشن نے جی ایس ٹی کے خلاف 9جولائی سے 5 روزہ ہڑتال کا اعلان کیا ہے۔
منگل کو اسلام آباد میں ایف بی آر کے صدر دفتر کے باہر احتجاج کا بھی اعلان کیا گیا ہے تاہم آل پاکستان ماربل مائننگ، پراسیسنگ ، ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن نے ہڑتال اور احتجاج سے لاتعلقی کا اعلان کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

31 مئی کو لاک ڈاؤن میں نرمی یا سختی کا فیصلہ کیا جائے گا

اسلام آباد : وزیراعظم عمران خان نے قومی رابطہ کمیٹی کا اجلاس 31 مئی کو …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے