پاک افغان میچ کے دوران پرتشدد کاروائیوں کے معاملے کی تحقیقات کا آغاز

برمنگھم: پاک افغان میچ کے دوران باقاعدہ سازش کے تحت ہنگامہ آرائی کی گئی

شکست برداشت نہ کر پانے والے افغان شر پسندوں نے گراونڈ میں بھی گھس کر پاکستانی کرکٹرز پر حملہ کرنے کی کوشش کی تھی۔

کرکٹ کی تاریخ میں پہلے کبھی ایسا واقعہ دیکھنے میں نہیں آیا،خفیہ ادارے ایکشن میں آگئے

برطانوی پولیس کے مطابق بظاہر پاکستان اور افغانستان کے میچ کے دوران ہونے والی ہنگامہ آرائی ایک منظم سازش معلوم ہوتی ہے۔ کرکٹ کی تاریخ میں کسی بھی میچ کے دوران اس قسم کے پرتشدد واقعات نہیں ہوئے۔ بتایا گیا ہے کہ برطانوی خفیہ اداروں نے اس معاملے کی تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے۔ اس سلسلے میں برمنگھم سے 4 افراد کو گرفتار بھی کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان اور افغانستان کے درمیان گزشتہ ہفتے ہونے والے میچ کے دوران پرتشدد کاروائیوں کے معاملے کی تحقیقات کا آغاز کر دیا گیا ہے۔

گرفتار کیے گئے افراد کا تعلق افغانستان سے بتایا جا رہا ہے۔ برطانوی پولیس نے مزید بتایا ہے کہ میچ کے دوران تشدد کا شکار ہونے والے پاکستانی متاثرین سے مزید معلومات حاصل کرنے کی کوشش کی جا رہی ہیں۔

واضح رہے کہ گزشتہ ہفتے کو پاکستان اور افغانستان کے درمیان ہونے والے میچ میں شر پسند افغانیوں نے اسٹیڈیم اور اسٹیڈیم کے باہر پاکستانی شائقین کرکٹ پر حملہ کیا تھا۔

واقعے کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ نے آئی سی سی سے پاکستانی کرکٹرز کی سیکورٹی بڑھانے کا مطالبہ کیا تھا۔ اب بتایا گیا ہے کہ پاکستان اور بنگلہ دیش کے میچ کے دوران سیکورٹی کے اضافی اور مزید سخت انتطامات کیے جائیں گے۔ واضح رہے کہ پاکستان اور بنگلہ دیش کے درمیان میچ 5 جولائی بروز جمعہ کو لارڈز کے تاریخی گراونڈ پر کھیلا جائے گا۔ یہ میچ پاکستان اور بنگلہ دیش دونوں کا آخری لیگ میچ ہوگا۔

یہ بھی پڑھیں

سابق کپتان ثناء میر نے انٹر نیشنل کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان

سابق کپتان ثناء میر نے انٹر نیشنل کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان

ثنا ء میر نے کہا ہے کہ پاکستان کی نمائندگی کرنا اعزاز اور گرین جرسی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے