وفاقی حکومت سے کچھ امید نہیں وہ کسی بھی وقت گورنر راج نافذ کر سکتی ہے

 پی ٹی آئی دھرنے میں شرکت کے اعلان کے بعد وفاقی حکومت اور خیبر پختونخواہ حکومت میں کشیدگی شدت اختیار کر گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق صوبائی اور وفاقی حکومت میں کشیدگی بڑھنے کے بعد حکومت کی اتحادی جماعتوں نے حکومت کو مشورہ دینا شروع کر دیا ہے کہ حالات کو کنٹرول کرنے کے لیے خیبرپختونخواہ میں گورنر راج نافذ کر دیا جائے۔ نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وفاقی حکومت کو تجویز پیش کر دی گئی ہے کہ صوبہ خیبر پختونخواہ میں گورنر راج نافذ کر دیا جائے یا تحریک عدم اعتماد کو لایا جائے۔ واضح رہے اس سے پہلے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ پرویز خٹک بھی اپنے ایک بیان میں کہہ چکے ہیں وفاقی حکومت سے کچھ امید نہیں وہ کسی بھی وقت گورنر راج نافذ کر سکتی ہے

یہ بھی پڑھیں

صوبائی کابینہ کے اجلاس میں ضم قبائلی اضلاع کے لیے 52 گاڑیوں کی خریداری کی منظوری

صوبائی کابینہ کے اجلاس میں ضم قبائلی اضلاع کے لیے 52 گاڑیوں کی خریداری کی منظوری

پشاور: سول پروسیجرکوڈ میں ترامیم کی منظوری اور رزمک کیڈٹ کالج کی ریگولیشن کی منظوری …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے