کباڑ کی دکان سے ہزاروں استعمال شدہ سرنجز اور ڈرپس برآمد

رتوڈیرو: لاڑکانہ میں 800 سے زائد افراد میں ایچ آئی وی پھیلنے کی ایک بڑی وجہ استعمال شدہ سرنجزہیں ۔جب ڈبلیو ایچ او کی رپورٹ میں انکشافات ہوئے تو انتظامیہ کی جگہ پولیس نے ایکشن شروع کردیا

پیرشیر روڈ پر کباڑ کی دکان سے ہزاروں استعمال شدہ سرنجز اور ڈرپس برآمد کرکے ایک شخص کو گرفتارکرلیا۔
ملزم نے بیان دیا ہے کہ سرنجز اور ڈرپس حیدرآباد سمیت مختلف علاقوں سے آنے والے بیوپاریوں کو بیچ دیتا تھا اور پورے لاڑکانہ میں ایسا ہوتا ہے۔
پولیس کی جانب سے استعمال شدہ سرنجز خریدنے والے دوسرے شہروں کے بیوپاریوں کے خلاف بھی مقدمہ درج کرکے کارروائی شروع کردی گئی ہے۔
شہریوں کا کہنا ہے کہ پولیس کی کارروائی اپنی جگہ مگر استعمال شدہ سرنجز کی شہر میں کھولے عام خریدوفرخت انتظامیہ کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔

یہ بھی پڑھیں

سندھ بھر میں کتوں کی بھرمار کے باعث شہریوں کی زندگی کو خطرہ لاحق

سندھ بھر میں کتوں کی بھرمار کے باعث شہریوں کی زندگی کو خطرہ لاحق

کراچی: حکومت سندھ ، محکمہ صحت اور بلدیہ عظمی شہریوں کو بہتر علاج کی سہولیات …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے