افطار کے نام پر, موروثی سیاسی آمریتوں, کی اگلی نسلوں کو, منتقلی کی, تقریب تھی

افطار کے نام پر موروثی سیاسی آمریتوں کی اگلی نسلوں کو منتقلی کی تقریب تھی

اسلام آباد: دونوں بڑی اپوزیشن جماعتوں کو عوام کا نہیں اقتدار کا درد ہے، کرپشن کی سیاست سے ان کے دامن داغدار ہیں اور یہ لوگ کس منہ سے عوام کی بات کر رہے ہیں، یہ سب چلے ہوئے کارتوس ہیں

قصیدہ گو، دربان موروثی سیاسی آمریت کے ہاتھ پر بیعت کی گردانیں پڑھنا شروع کردیں گے، قوم کو غلامی میں نہیں جانے دیں گے، عمران خان قوم کو غلام ابن غلام بنانے سے بچانے کی جدوجہد کررہے ہیں۔
ان لوگوں نے عوام کے حقوق پر ڈاکہ ڈالا، یہ لوگ ہی قوم کو مقروض کرنے والے ہیں، عوام ان لوگوں کی چالوں کو سجھتے ہیں۔
فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ ایک طرف حق اور سچ اور دوسری طرف جھوٹ ہے، پاکستان کے عوام عمران خان اور حکومت کے ساتھ ہیں۔
وفاقی وزیر شیریں مزاری کا اپنے ردعمل میں کہنا تھا مزے کی بات یہ ہے کہ اپوزیشن کی کُل جماعتی کانفرنس کی صدارت وہ مولانا فضل الرحمان کریں گے جو خود اسمبلی کے رکن بھی منتخب نہیں ہو سکے۔

یہ بھی پڑھیں

سرحدوں پر خطرات ہیں، غیر اعلانیہ جنگ شروع ہو چکی: شیخ رشید

سرحدوں پر خطرات ہیں، غیر اعلانیہ جنگ شروع ہو چکی: شیخ رشید

وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے شہباز شریف کو اپنا اچھا دوست قرار دیتے ہوئے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے