امریکا اور طالبان کے, درمیان بات چیت, کا حالیہ, دور ’مثبت, اور تعمیری

امریکا اور طالبان کے درمیان بات چیت کا حالیہ دور ’مثبت اور تعمیری

کابل: عام طور پر مذاکرات کا یہ دور مثبت اور تعمیری تھا اور دونوں فریقین نے ایک دوسرے کو احتیاط اور تحمل سے سنا

کابل میں امریکی سفارتخانے اور امریکیوں کے لیے مذاکرات کی قیادت کرنے والے نمائندہ خصوصی زملے خلیل زاد نے اس پر فوری طور پر کوئی تبصرہ نہیں کیا۔
سہیل شاہین کا کہنا تھا کہ امن مذاکرات ان بنیادی سوال پر موجود ہے کہ جب غیر ملکی فورسز افغانستان سے انخلا کریں گی۔
امریکا کی جانب سے کسی انخلا کے معاہدے پر اتفاق کیا جائے، اس کا طالبان سے مطالبہ ہے کہ وہ سیکیورٹی کی ضمانت، جنگ بندی سمیت کابل حکومت اور دیگر افغان نمائندوں کے ساتھ ’انٹرا افغان‘ مذاکرات کو وعدہ کریں۔
طالبان کا اس بات پر اصرار ہے کہ امریکا کی جانب سے جب تک انخلا کے وقت کا اعلان نہیں کیا جاتا وہ ان چیزوں میں سے کچھ نہیں کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں

طلوع آفتاب سے قبل تین منزلہ رہائشی عمارت گرنے سے کم از کم 10 افراد ہلاک

طلوع آفتاب سے قبل تین منزلہ رہائشی عمارت گرنے سے کم از کم 10 افراد ہلاک

بھارت: بھونڈی کی نگرانی کرنے والے تھانہ سٹی اتھارٹی کے ایک عہدیدار نے اے ایف …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے