عراقیوں کے قاتل امریکی فوجی کی سزا ٹرمپ نے معاف کردی

عراقیوں کے قاتل امریکی فوجی کی سزا ٹرمپ نے معاف کردی

امریکی صدر ٹرمپ نے اپنے ملک کے اس فوجی کو معاف کر دیا ہے جسے ایک عراقی قیدی کو جان سے مارنے پر پچّیس سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔

رپورٹ کے مطابق امریکی صدر ٹرمپ نے امریکی فوجی مائیکل بہنا کی سزا کو معاف کر دیا۔ اس امریکی فوجی نے دو ہزار نو میں عراق میں ایک قیدی کو ہلاک کر دیا تھا جس کے جرم میں اسے پچیس برس قید کی سزا سنائی گئی تھی۔
پچیس برس قید کی سزا سنائے جانے کے بعد امریکی فوج کے عفو و درگذر کے محکمے نے بہنا نامی اس امریکی فوجی کی قید کی سزا دس سال کم کرواتے ہوئے پندرہ برس کروادی تھی اور اب امریکی صدر ٹرمپ نے اس امریکی فوجی کی سزا ختم کر دی اور اسے معاف کر دیا۔
یہ اقدام ایسی حالت میں عمل میں لایا گیا ہے کہ اس وقت سوشل میڈیا پر عراق کے صوبے کرکوک میں واقع علاقے الحویجہ میں عراقی سیکورٹی اہلکاروں پر امریکی جنگی طیاروں کے حملے کا مسئلہ، جس میں ایک شخص جاں بحق اور دو دیگر زخمی ہو گئے تھے، کافی زور پکڑے ہوئے ہے۔

جنگی جنون میں مبتلا بھارت کا دفاعی بجٹ 66 ارب ڈالر سے تجاوز کرگیا

یہ بھی پڑھیں

ریاست جارجیا کے حراستی مراکز میں قید خواتین کے ’رحم مادر‘ نکالے جانے کا اسکینڈل

ریاست جارجیا کے حراستی مراکز میں قید خواتین کے ’رحم مادر‘ نکالے جانے کا اسکینڈل

امریکا: اسکینڈل اس وقت سامنے آیا جب ریاست جارجیا کی ارون کاؤنٹی کے ایک حراستی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے