صارفین, کو, مہنگائی سے, بھرا ہوا رمضان دیکھنے ,کو ملا

صارفین کو مہنگائی سے بھرا ہوا رمضان دیکھنے کو ملا

کراچی: تمام ضروریات زندگی گوشت، گھی، کھانے پکانے کا تیل، آٹا، پیاز، چکن اور پھلوں کی قیمتیں میں ہوشربا اضافہ دیکھنے میں آیا ہے

گوشت فروشوں نے فی کلو قیمت میں 20 سے 50 روپے تک اضافہ کردیا، جو علاقوں کے حساب سے منحصر ہے، بچھیا کا گوشت جو پہلے 500 روپے فی کلو فروخت کیا جارہا تھا اس کی قیمت اب 520 سے 540 روپے لی جارہی ہے جبکہ بغیر ہڈی کا گوشت 600 روپے فی کلو کے بجائے 620 سے 640 روپے کلو فروخت کیا جارہا ہے۔
مقدس کے آغاز سے کچھ روز قبل ہی مٹن فروخت کرنے والوں نے قیمتوں میں اضافہ کیا تھا جبکہ میونسپل انتظامیہ اس تمام صورتحال کو سائڈ لائن ہو کر دیکھ رہی ہے اور صارفین کو ریلیٹرز کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا ہے۔
ایف بی ایریا میں موجود ایک دکاندار کا کہنا تھا کہ ’ جب ہر اشیا کی قیمت میں اضافہ ہورہا ہے تو سرخ گوشت کی قیمت میں کیوں نہیں‘، ساتھ ہی یہ تبصرہ کیا کہ ’اگر غذائی اشیا مہنگے ہونے سے صارفین کو اثر پڑا ہے تو اس نے ہماری زندگی کی قیمت بھی بڑھا دی ہے‘۔
مرغی کی قیمت میں بھی کچھ ایسی صورتحال دیکھنے میں آرہی ہے، کچھ دکانداروں نے اس کی قیمت 380 سے 390 روپے فی کلو لینا شروع کردی ہے جبکہ کچھ نے اس کی قیمتیں 350 سے 360 روپے کلو برقرار رکھی ہیں۔
قیمتوں میں اضافے کے رجحان میں اپنا حصہ ملاتے ہوئے ڈبل روٹی بنانے والوں نے بھی 5 سال 4 ماہ کے وقفے کے بعد اپریل میں قیمتں میں 8 فیصد سے زائد اضافہ کردیا۔

تمام ضروریات زندگی گوشت، گھی، کھانے پکانے کا تیل، آٹا، پیاز، چکن اور پھلوں کی قیمتیں میں ہوشربا اضافہ دیکھنے میں آیا ہے

گوشت فروشوں نے فی کلو قیمت میں 20 سے 50 روپے تک اضافہ کردیا، جو علاقوں کے حساب سے منحصر ہے، بچھیا کا گوشت جو پہلے 500 روپے فی کلو فروخت کیا جارہا تھا اس کی قیمت اب 520 سے 540 روپے لی جارہی ہے جبکہ بغیر ہڈی کا گوشت 600 روپے فی کلو کے بجائے 620 سے 640 روپے کلو فروخت کیا جارہا ہے۔
مقدس کے آغاز سے کچھ روز قبل ہی مٹن فروخت کرنے والوں نے قیمتوں میں اضافہ کیا تھا جبکہ میونسپل انتظامیہ اس تمام صورتحال کو سائڈ لائن ہو کر دیکھ رہی ہے اور صارفین کو ریلیٹرز کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا ہے۔
ایف بی ایریا میں موجود ایک دکاندار کا کہنا تھا کہ ’ جب ہر اشیا کی قیمت میں اضافہ ہورہا ہے تو سرخ گوشت کی قیمت میں کیوں نہیں‘، ساتھ ہی یہ تبصرہ کیا کہ ’اگر غذائی اشیا مہنگے ہونے سے صارفین کو اثر پڑا ہے تو اس نے ہماری زندگی کی قیمت بھی بڑھا دی ہے‘۔
مرغی کی قیمت میں بھی کچھ ایسی صورتحال دیکھنے میں آرہی ہے، کچھ دکانداروں نے اس کی قیمت 380 سے 390 روپے فی کلو لینا شروع کردی ہے جبکہ کچھ نے اس کی قیمتیں 350 سے 360 روپے کلو برقرار رکھی ہیں۔
قیمتوں میں اضافے کے رجحان میں اپنا حصہ ملاتے ہوئے ڈبل روٹی بنانے والوں نے بھی 5 سال 4 ماہ کے وقفے کے بعد اپریل میں قیمتں میں 8 فیصد سے زائد اضافہ کردیا۔

یہ بھی پڑھیں

لی مارکیٹ میں عوام کیلئے سہولیات سے لیس نئے بیت الخلا قائم

لی مارکیٹ میں عوام کیلئے سہولیات سے لیس نئے بیت الخلا قائم

کراچی: بیت الخلا دو خواتین کے لیے اور دو مردوں کے لیے پاکستان کے پہلے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے