غزہ کی, پٹی کے, گرد موجود, ان کے ملک کی افواج, ’ٹینکوں، توپوں اور, مسلح افواج کے ساتھ پیش, قدمی

غزہ کی پٹی کے گرد موجود ان کے ملک کی افواج ’ٹینکوں، توپوں اور مسلح افواج کے ساتھ پیش قدمی

غزہ: اسرائیلی فوج کا دعویٰ ہے کہ غزہ کی جانب سے اسرائیلی علاقوں کو ہدف بنا کر 600 سے زیادہ راکٹ داغے گئے جس کے بعد جوابی کارروائی میں 320 فلسطینی اہداف کو نشانہ بنایا گیا ہے

اسرائیل کے مطابق اس کی فضائیہ نے اب تک حماس کے 150 راکٹوں کو تباہ کیا ہے۔
اسرائیلی وزیرِ اعظم نتھن یاہو کے مطابق غزہ کی پٹی کے گرد موجود ان کے ملک کی افواج ’ٹینکوں، توپوں اور مسلح افواج کے ساتھ پیش قدمی کریں گی۔‘
اسرائیل نے غزہ کی پٹی کے گرد 40 کلومیٹر میں موجود تمام سکولوں کو بند کر دیا ہے جبکہ عوام کے لیے پناہ گاہیں کھولی گئی ہیں۔
غزہ کی وزارت صحت کے مطابق حالیہ جھڑپوں میں 23 فلسطینی ہلاک ہو چکے ہیں۔ دوسری جانب اسلامی جہاد تنظیم نے تصدیق کی ہے کہ اسرائیلی حملوں سے اس کے سات عسکریت پسند ہلاک ہوئے ہیں۔
مرنے والوں میں عام شہریوں سمیت ایک 12 سالہ بچہ اور ایک حاملہ خاتون بھی مبینہ طور پر شامل ہیں۔
اسرائیل نے دعویٰ کیا تھا کہ اس نے ایک اور فوجی کارروائی کے دوران حماس کے ایک عسکریت پسند کمانڈر حامد ہمدان الخودری کو ہلاک کیا ہے۔
اسرائیل کی جانب سے الخودری جیسے حماس کے کسی سینئر لیڈر کو ہلاک کرنے کی پانچ برس میں یہ پہلی کارروائی ہے۔
جمعے کو ہونے والے ایک حملے میں دو اسرائیلی فوجیوں کے زخمی ہونے کے بعد اسرائیلی حملے کے نتیجے میں چار فلسطینی ہلاک ہو گئے تھے، جن میں حماس سے تعلق رکھنے والے دو عسکریت پسند بھی شامل ہیں۔
اسرائیل میں گذشتہ ماہ ہونے والے عام انتخابات کے دوران عارضی جنگ بندی کے بعد اس طرح کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔
یروشیلم میںامن کے لیے طویل عرصہ سے جاری مصر اور اقوام متحدہ کی کوششوں کے باوجود ایسی جارحانہ کاروائیوں میں اضافے کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔
اسرائیل کی فضائی کارروائی میں ترکی کی نیوز ایجنسی اناتولو کے دفاتر کو بھی نقصان پہنچا، جس کی استنبول کی جانب سے شدید مذمت کی گئی۔
امن کے لیے طویل عرصہ سے جاری مصر اور اقوام متحدہ کی کوششوں کے باوجود ایسی جارحانہ کاروائیوں میں اضافے کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔
اسرائیل کی فضائی کارروائی میں ترکی کی نیوز ایجنسی اناتولو کے دفاتر کو بھی نقصان پہنچا، جس کی استنبول کی جانب سے شدید مذمت کی گئی۔
اسرائیل کی دفاعی افواج (آئی ڈی ایف) کے مطابق راکٹ حملے مقامی وقت کے مطابق 10:00 بجے شروع ہوئے۔
سنیچر کو کیے گئے راکٹ حملوں نے اسرائیلوں کو حفاظت کے لیے بھاگنے پر مجبور کر دیا۔ اسرائیلی میڈیا نے ایشکیلون میں گھروں کو پہنچنے والے نقصانات دکھائے ہیں۔
آئی ڈی ایف کے مطابق ان کے آئرن ڈوم میزائیل سسٹم نے درجنوں راکٹ حملے ناکام بنائے۔
آئی ڈی ایف کا کہنا ہے کہ اس کے جنگی طیاروں نے حماس اور اس سے تعلق رکھنے والے کم از کم 120 ٹھکانوں کو نشانہ بنایا۔ انھوں نے مزید بتایا کہ عسکریت پسندوں پر ٹینکوں سے بھی حملے کیے گئے۔
دوسری جانب ترکی کے وزیر خارجہ مولوت چاؤ شولو نے ٹوئٹر پر جاری کیے جانے والے ایک بیان میں ان حملوں کی مذمت کی ہے۔ انھوں نے ’عام شہریوں‘ کے خلاف اسرائیلی حملوں کو ’انسانیت کے خلاف جرم قرار دیا۔

یہ بھی پڑھیں

مختلف شہروں میں گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان

مختلف شہروں میں گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان

ریاض: سعودی محکمہ موسمیات نے امکان ظاہر کیا ہے کہ ریاض، مدینہ منورہ، بریدہ، نجران، …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے