پاکستان کی, ترقی کے, لیے سیاستدان, کے, سوا کوئی, راستہ نہیں

پاکستان کی ترقی کے لیے سیاستدان کے سوا کوئی راستہ نہیں

اسلام آباد: پیپلزپارٹی خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ صدارتی نظام سے پاکستان دو لخت ہوا، ٹیکنو کریٹ کی حکومت کو مسلسل ناکامیاں ہوئیں

پاکستان کی ترقی کے لیے سیاستدان کے سوا کوئی راستہ نہیں، سیاستدانوں کو خود مختاری ملنی چاہیے، دعویٰ ہے کہ سیاست دان خود مختار ہو تو معیشت 3 سال میں آسمان پر چلی جائے گی۔
40 سے 45 سال تک صدارتی نظام رہا اور معیشت تباہ ہوئی، جب جب سویلین وزیر خزانہ آئے تو معیشت بہتر ہوئی، بطور وزیر خزانہ لیاقت علی خان، ڈاکٹر مبشر اور یاسین وٹو کا بجٹ تاریخ میں بہتر رہا تاہم اس ملک کی تباہی اس وقت شروع ہوئی جب ڈاکٹر محبوب الحق کی ڈاکٹریٹ آ گئی۔
عمران خان کی حکومت رہے گی یا نہیں، غیر یقینی باتیں نہیں کرنا چاہتا، کرپشن میں ملوث وزرا عمران خان کی کابینہ میں کیسے اور کیوں آئے، تحریک انصاف کے رہنما بھی اب یہ پوچھنا شروع ہو گئے ہیں۔
خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ حفیظ شیخ پیپلز پارٹی میں تھے تو اسی کی پالیسی پر عمل پیرا تھے، اب تحریک انصاف کی پالیسی کے مطابق بجٹ آئے گا، تاریخ میں پہلی بار اپوزیشن نے حکومت کو آئی ایم ایف کے پاس جانے کا مشورہ دیا،

یہ بھی پڑھیں

نواز شریف کے اے پی سی سے خطاب کو روکنے لیے قانونی طریقہ کار پر غور

نواز شریف کے اے پی سی سے خطاب کو روکنے لیے قانونی طریقہ کار پر غور

اسلام آباد: اب اس معاملے پر وفاقی حکومت بھی میدان میں آ گئی ہے اور …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے